ترک صدر کی قوم سے فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کی اپیل

ترک صدر کی قوم سے فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کی اپیل، فرانسیسی صدر کے بیان پر دنیا بھر میں مظاہرے

فرانس میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت سے متعلق فرانسیسی صدر میکرون کے متنازعہ بیان کے بعد سے دنیا بھر کے مسلمانوں میں شدید غم و غصہ پایا جا رہا ہے اور دنیا بھر کے مسلمان فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ بھی کر رہے ہیں۔

ترک صدر طیب اردوان نے بھی اپنی قوم سے خطاب کرتے ہوئے فرانسیسی صدر کے گستاخانہ خاکوں سے متعلق متنازعہ بیان کے ردعمل میں اپنی قوم سے فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کی اپیل کی ہے۔

ترک صدر طیب اردوان نے انقرہ میں ہفتہ میلاد النبی ﷺ کانفرنس سے خطا ب میں کہا کہ فرانس میں اِس وقت ذہنی طور پر مفلوج شخص حکمران ہے جو دین اسلام کی بے حرمتی اور بدکلامی کررہا ہے، جب کہ انہوں نے اپنے خطاب میں فرانس میں مسجدوں پر چھاپے کی بھی شدید الفاظ میں مزمت کی۔

واضح رہے کہ ترک صدر طیب اردوان نے دلیری کا مظاہرہ کرتے ہوئے گزشتہ دنوں فرانسیسی صدر کے گستاخانہ خاکوں کی اشاعت سے متعلق متنازعہ بیان پر انہیں دماغی مریض قرار دیتے ہوئے انہیں اپنے دماغ کا علاج کروانے کا مشورہ دیا تھا، جس پر فرانس نے رد عمل دیتے ہوئے فوری طور پر انقرہ سے اپنا سفیر واپس بلا لیا تھا۔

دوسری جانب دنیا بھر کے مسلمانوں کی جانب سے بھی فرانسیسی صدر کے متنازع بیان کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے جو ہر گزرتے لمحے کے ساتھ بڑھتا چلا جا رہا ہے، مظاہرے میں شریک تمام افراد کی جانب سے فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کا اعلان بھی کیا جا رہا ہے۔

فرانسیسی صدر کی تقریر اورفرانس میں توہین آمیزخاکوں کی اشاعت کے خلاف فلسطین، شام، لیبیا اور بنگلادیش میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے، عوام کی بڑی تعداد نے مظاہروں میں شرکت کرتے ہوئے فرانس کے عمل کی شدید مذمت کی۔

مزید برآں کویت، اردن اور قطر سمیت متعدد عرب ممالک نے بھی فرانسیسی صدر کے بیان کے ردعمل میں فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ اردن نے بھی فرانسیسی صدر کے بیان کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >