فرانس کی عرب ممالک سے فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ نہ کرنے کی اپیل

فرانسیسی صدر کے سلام سے متعلق متنازعہ بیان کے بعد پاکستان سمیت دنیا بھر میں فرانسیسی مصنوعات کی بائیکاٹ مہم میں تیزی آنے لگی۔۔ فرانس نے مشرقِ وسطیٰ کے ممالک سے فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ ختم کرنے کی اپیل کردی

حالیہ دنوں میں چند ایسی ویڈیوز سوشل میڈیا سائٹس پر پوسٹ کی گئی ہیں جن میں کویت، اُردن اور قطر سمیت دیگر ممالک کے کاروباری حضرات کو اپنی دکانوں سے فرانسیسی مصنوعات کو ہٹاتے اور ان مصنوعات کو دوبارہ فروخت نہ کرنے کا عزم کرتے دکھایا گیا ہے۔ پاکستان میں گذشتہ 48 گھنٹوں سے فرانس کی مصنوعات کا بائیکاٹ کرنے کا ٹرینڈ ٹاپ پر ہے۔

دنیا بھر میں فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ سے فرانسیسی حکومت بھی پریشان ہوگئی۔۔ بی بی سی اردو کے مطابق فرانس کی وزات خارجہ کا کہنا ہے کہ فرانس کی مصنوعات کے بائیکاٹ کے ’بے بنیاد‘ اعلانات کو ’شدت پسند اقلیت کی جانب سے ہوا دی جا رہی ہے۔‘

فرانس کی وزاتِ خارجہ نے اس حوالے سے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ بائیکاٹ کے احکامات بے بنیاد ہیں اور انھیں جلد ازجلد روکا جائے اور ساتھ ہمارے ملک کے خلاف تمام حملے بھی جو ایک شدت پسند اقلیت کی جانب سے پیش کیے جا رہے ہیں۔

خیال رہے کہ عرب دنیا کی سب سے بڑی معیشت سعودی عرب میں فرانسیسی سپرمارکیٹ چین کیریفور ہے جس کے بائیکاٹ سے متعلق ہیش ٹیگ دوسرے نمبر پر ٹرینڈ کرتا رہا۔

اسکے علاوہ کویت میں بھی فرانسیسی اشیاء کے بائیکاٹ کی مہم زوروں پر ہے۔ کویتی پرچون فروشوں نے فرانسیسی مصنوعات کا اجتماعی بائیکاٹ کردیا ہے اور انھوں نے اپنی دکانوں اور سپر اسٹورز سے فرانسیسی اشیاء ہٹا دی ہیں۔کویت کی غیر سرکاری صارفین کوآپریٹو سوسائٹیز کی یونین نے جمعہ کو فرانسیسی اشیاء کے بائیکاٹ کے لیے ایک باضابطہ سرکلر جاری کیا تھا۔اس یونین میں کویت کی 70 سے زیادہ تنظیمیں شامل ہیں۔

گزشتہ روز ترکی کے صدر طیب اردوان نے بھی اپنی قوم سے خطاب کرتے ہوئے فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کی اپیل کی ہے۔

ترک صدر طیب اردوان نے انقرہ میں ہفتہ میلاد النبی ﷺ کانفرنس سے خطا ب میں کہا کہ فرانس میں اِس وقت ذہنی طور پر مفلوج شخص حکمران ہے جو دین اسلام کی بے حرمتی اور بدکلامی کررہا ہے، جب کہ انہوں نے اپنے خطاب میں فرانس میں مسجدوں پر چھاپے کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

دوسری جانب سینیٹ اور قومی اسمبلی میں بھی فرانسیسی صدر کے اسلام مخالف بیان اور گستاخانہ خاکوں کیخلاف قرار داد منظور کرلی گئی جس میں او آئی سی (آرگنائزیشن آف اسلامک کوآپریشن) سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ 15 مارچ کو اسلامو فوبیا کیخلاف دن قرار دے، اس کے علاوہ فرانس کی پارلیمنٹ میں باحجاب خاتون سے کی گئی توہین کی مذمت بھی کی گئی۔

پاکستان میں بھی انجمن تاجران پاکستان نے بائیکاٹ کا اعلان کردیا ہے ۔ اس حوالے سے میڈیا سے بات کرتے ہوئے آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر محمد اجمل بلوچ کا کہنا تھا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی حرمت سے بڑھ کر ہمارے لئے کچھ بھی نہیں ہے، ہم لوگ فرانسیسی مصنوعات کا بائیکاٹ کرتے ہوئے انہیں اپنی دکانوں سے باہر پھینک دیں گے اور اپنا احتجاج ریکارڈ کروائیں گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >