انڈین پریمیئر لیگ میں میچ فکسنگ کی ہوش ربا کہانی

بھارت کے مشہور اداکار و ہدایت کار کمال راشد خان نےانڈین پریمئر لیگ میں سٹے بازی کے تمام پول کھول دیئے ہیں۔

کمال راشد خان نے اپنے ایک ویڈیو بلاگ میں انڈین پریمئر لیگ میں کرپشن پر بات کرتے ہوئے کہا کہ جیسے شیئر مارکیٹس میں کسی دور میں بھاؤ کھلتے تھے بالکل اسی طرح آج کل کرکٹ میں ٹیموں کا بھاؤ کھلتا ہے جو پورے کھیل کے دوران اوپر نیچے ہوتا رہتا ہے اور بعض اوقات تو بھاؤ ایک ایک گیند کے بعد بدلتا رہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس سٹہ مارکیٹ کو کنٹرول کرنے والے کو "ڈی” کہا جاتا ہے یہی ڈی طے کرتا ہے کہ کس ٹیم کا بھاؤ کتنا ہوگا، ایک میچ پر سٹہ لگانے والو ں کی تعداد لاکھوں میں ہوتی ہے، اسی لیے اس پوری مارکیٹ کو کنڑول کرنے والے لوگ بھی موجود ہیں جو بہت طاقتور اور بااثر ہوتے ہیں۔

کمال راشد خان نے  آئی پی ایل کے ایک میچ کا قصہ سناتے ہوئے بتایا کہ کس طرح میچز میں سٹے کا بھاؤ بڑھانے کیلئے صورتحال کو اوپر نیچے کیا جاتا ہے اور کیسے جیت کے قریب ٹیم کو شکست کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ کنگز الیون پنجاب اور ممبئی انڈین کا میچ تھا، آخری اوور میں کنگز الیون کو 9 رنز درکار تھے، ٹیم کی میچ پر گرفت مضبوط تھی، سٹے باز ممبئی انڈیز کی جیت پر دل کھول کر پیسہ لگارہے تھے، آخری گیند پر صرف 2 رنز درکار تھے، بھاؤ مزید اوپر گیا، آخری گیند پر جورڈن نے شاٹ کھیل کر ایک رنز مکمل کیا، گیند ابھی اتنی دور تھی کہ دوسرا رنز مکمل کیا جاسکتا تھا مگر جارڈن نے واپسی کیلئے طویل رننگ کی اور 18 میٹر کے فاصلے کو 22 میٹر بنادیا اور ایک 2 انچ دوری پر آؤٹ ہوگئے۔

میچ سوپر اوور میں داخل ہوگیا، جواریوں کے ممبئی انڈیز کی جیت پر لگائے گئے پیسے ڈوب گئے، سوپر اوور شروع ہوا کنگز الیون پنجاب نے پورے اوور میں صرف 5 رنز بنائے، ممبئی انڈینز جس کیلئے ایک اوور میں 20/25 رنز بنانا معمولی بات ہوتی ہے اس کی جیت یقینی ہوگئی سٹے بازوں نے دھڑا دھڑ ممبئی انڈیز کی جیت پر پیسہ لگایا، ممبئی انڈیزنے بیٹنگ کی اور بمشکل اوور میں 5 رنز بنائے۔

ایک میچ سٹیڈیم میں جاری تھا مگر اصل میچ ڈی کھیل رہا تھا جواریوں کے ساتھ، جواریوں کے ایک بار پھر کروڑوں روپے ڈوب گئے ، مگر ابھی بھی ہار نہیں مانی میچ باقی تھا دوسرا اوور شروع ہوا، سٹے باز بھاؤ بڑھا چکے تھے جواری اپنے ڈوبے ہوئے پیسے اور مزید جیتنے کیلئے مزید پیسہ لگائے جارہے تھے۔

کمال راشد نے بتایا کہ دوسرے سوپر اوور میں ممبئی انڈینز نے صرف 8 رنز بنائے اب کنگز الیون کو جیت کیلئے 9 رنز بنانے تھے مگر کنگز الیون سے تو نہ آخری اوور میں سکور بنا نہ سوپر اوور میں تو اس سے اب 9 رنز کیسے بنتے، اس کی شکست پر بھاؤ بھی بڑھا ہوا تھا اور ہار تھی بھی یقینی، جواریوں نے بچی کچھی دولت کنگز الیون کی ہار پر لگادی۔

بھارتی اداکار نے کہا کہ اس میچ میں ممبئی انڈینز کی فتح یقینی تھی مگر پیچھے ڈی بھائی نے تو کچھ اور ہی سکرپٹ لکھ رکھا تھا اور وہ جواریوں کے جذبات سے کھیل رہے تھے، کنگز الیون پنجاب کی ٹیم نے بیٹنگ شروع کی اور باآسانی 9 رنز بنا کر میچ جیت کر دنیا بھر کے سٹے بازوں کے ارمانوں پر پانی پھیر دیا۔

کمال راشد خان نے کہا لوگ کہیں گے کرکٹ میں ری ٹیک تو ہوتا نہیں ہے یہاں فکسنگ کیسے ہوسکتے ہے تو ڈبلیو ڈبلیو ای جس میں پہلوان ایک دوسرے کو مار مار کر زخمی کردیتے ہیں، اس میں بھی انٹرٹینمنٹ جڑی ہوتی ہے ، اس میں کچھ بھی سچ نہیں ہوتا سب کچھ بس تفریح کیلئے ہوتا ہے جسے دنیا میں لاکھوں لوگ دیکھتے ہیں اور محظوظ ہوتے ہیں۔

آئی پی ایل میں ایسے سنسنی خیز میچز کی روایات نئی نہیں ہے، اس میں اکثر جیتتی ہوئی ٹیم ہار جاتی ہے اور شکست خوردہ ٹیمیں فاتح بن جاتی ہیں، گزشتہ ہفتے کنگز الیون اور سن رائزرز حیدرآباد کے درمیان ہونے والا میچ بھی ایسی ہی ایک مثال تھی، سن رائزرز کو فتح کیلئے 127 رنز بنانے تھے، 4 وکٹوں کے نقصان پر 110 رنز بنالیے گئے فتح یقینی ہوگئی، سٹہ لگ گیا، لوگوں نے سن رائزرز کی فتح پر پیسہ لگادیا تو "ڈی” نے میچ پلٹ دیا اور دیکھتے ہی دیکھتے سن رائزرز کے6 بلے باز 4 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئے اور کنگز الیون میچ 12 رنز سے جیت گئی۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>