چیف آف ڈیفنس کے کرپشن مخالف پیغام پر کیا بھارتی جمہوریت بھی خطرے پڑگئی؟

چیف آف ڈیفنس کے کرپشن مخالف پیغام پر کیا بھارتی جمہوریت بھی خطرے پڑگئی؟

کیا بھارت میں بھی جمہوریت خطرے میں پڑگئی؟ کیا چیف آف ڈیفنس سٹاف جنرل بپن راوت نے اپنی آئینی حدود سے تجاوز کرتے ہوئے ملک میں جاری کرپشن کے خلاف پیغام جاری کردیا ہے؟

بھارت میں نریندر مودی کی حکومت کے دوران کرپشن نئی منزلوں کو چھو رہی ہے، ملک میں کرپشن سے پریشان ہوکر جنرل بپن نے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا کہ میرا ماننا ہے کہ کرپشن ہمارے ملک کی معاشی، سیاسی اور سماجی ترقی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے، میں اس بات پر یقین رکھتا ہوں کہ ملک سے کرپشن کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے تمام اسٹیک ہولڈرز جس میں حکومت، عوام اور نجی شعبے بھی شامل ہیں سب کو مل کر کام کرنا ہوگا۔

بھارتی چیف آف ڈیفنس سٹاف نے  مزید کہا کہ مجھے اس بات کا احساس ہوچکا ہے کہ اس ملک کے ہر شہری کو ذمہ داری اٹھانا ہوگی، ایمانداری اختیار کرنا ہوگی اور ملکی سالمیت کیلئے اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، اور اس ملک سے کرپشن کے خاتمے کیلئے جنگ میں حکومت کا ساتھ دینا ہوگا۔

انہوں نے عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اپنی روزمرہ زندگیوں کو قانون کے مطابق ڈھالیں ، رشوت ستانی کو فروغ نہ دیں اور جہاں بھی کرپشن دیکھیں فوری طور پر متعلقہ حکام کو آگاہ کریں، تاکہ تمام حکومتی امور کو شفافیت سے سرانجام دیا جاسکے۔

واضح ہو کہ بھارت میں سرکاری سطح پر ہونے والی کرپشن کے حوالے سے بین الاقوامی ادارے فنانشل کرائمز انفورسمنٹ نے بھی اپنی رپورٹ میں بھارتی بینکوں کی جانب سے مشکوک لین دین میں ملوث ہونے سے متعلق نشاندہی کی تھی، جبکہ نچلی سطح میں بھارت کے تمام سرکاری محکمے رشوت کا گڑھ بن چکے ہیں۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا تھا کہ بھارتی بینکوں کے ذریعے ایک ارب ڈالر سے زائد کی منی لانڈرنگ کی گئی، آئی پی ایل میں میچ فکسنگ اور سٹے بازی کے ذریعے کرپشن کی جارہی ہے اسی طرح بھارت قیمتی دھاتوں، نوادرات کی سمگلنگ میں بھی بہت اگے نکل چکا ہے، تاہم حکومتی سطح پر ان تمام مالی جرائم کی روک تھام کیلئے کسی قسم کے اقدامات نہیں اٹھائے جارہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >