دبئی :پولیس اہلکارکو کاراورمہنگی گھڑی کی رشوت آفر کرنے پرپاکستانی شہری کو سزا

دبئی میں پولیس اہلکار کو کار اور مہنگی گھڑی کی رشوت آفر کرنے پر پاکستانی شہری کو 2 سال قید کی سزا

رواں سال جون کے مہینے میں دبئی سے 40 سالہ پاکستانی شہری کو گرفتار کیا گیا اور اسے ڈیٹینشن سنٹر لایا گیا جہاں اس نے پولیس اہلکار کو رشوت میں 50ہزار درہم، ایک مہنگی رولیکس گھڑی، مرسڈیز کار اور اس کی ماہانہ 20 ہزار درہم تنخواہ دینے کی آفر کرائی۔

پولیس اہلکار نے اس پاکستانی شہری کی رشوت کی آفر سے متعلق حکام کو مطلع کر دیا جس کے بعد اتوار کے روز دبئی کی عدالت عظمیٰ نے اس پاکستانی شہری کو 2 سال کیلئے جیل میں ڈال دیا ہے۔ عدالت نے فیصلہ کیا کہ اپنی سزا کی مدت پوری کرنے کے بعد اس شخص کو ایک لاکھ 40 ہزار درہم جرمانہ ادا کرنے کے بعد ڈی پورٹ کر دیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق اس شخص کو پہلے ایک بار ڈی پورٹ کر دیا گیا تھا جس کے بعد وہ دوبارہ غیر قانونی طریقے سے دبئی آ گیا تھا۔ جس اسے پولیس اہلکاروں نے گرفتار کر کے بوردبئی پولیس اسٹیشن لایا تو اس نے ایک اور پولیس اہلکار کو رشوت دینے کی آفر کی، اس اہلکار نے اس سے سوچنے کی مہلت مانگی اور اپنے ڈائریکٹر کو معطلع کر دیا۔

اس پولیس اہلکار کے مطابق وہ شخص یہ چاہتا تھا کہ اس کے کسی جاننے والے کو ایک فون کال کرا دی جائے جس کے بعد وہ رشوت کی رقم لے کر آئے گا اور اس کے بعد باقی رقم وہ قید سے باہر نکلنے کے بعد ادا کر دے گا۔

پولیس اہلکار نے اس شخص کے مطالبے پر فون کرا دیا اور جب 2 لوگ رشوت کے پیسے لیکر آئے تو ان دونوں کو بھی گرفتار کر لیا گیا تاہم ان میں سے ایک کا کہنا تھا کہ گرفتار شخص اس کا رشتہ دار ہے اور اس نے صرف یہ کہا تھا کہ اتنے پیسے لیکر بوردبئی پولیس اسٹیشن آؤ جبکہ اس کے ساتھ آنے والے دوسرے شخص کا کہنا تھا کہ وہ صرف اپنے ساتھ آنے والے شخص کے کہنے پر اس کے ساتھ آیا تھا۔

عدالت نے ان دونوں افراد کو اتوار کے روز الزامات سے بری کر دیا جبکہ رشوت کی آفر کرنے والے پاکستانی کو2 سال کے لیے جیل بھیج دیا گیا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >