نئے سعوی ریال پر کشمیر کو انڈیا کا حصہ نہ دکھانے پر بھارت بلبلا اٹھا

سعودی عرب نے جی20 اجلاس کے موقع پر 20 ریال کا نیا کرنسی نوٹ جاری کر دیا، سعودی عرب کے نئے کرنسی نوٹ پر دنیا کے نقشے میں کشمیر کو انڈیا میں شامل نہ کرنے پر بھارت بلبلا اٹھا۔

سعودی عرب میں 21 اور 22 نومبر کو جی 20 کا اجلاس ہونے جا رہا ہے جس کی میزبانی سعودی عرب کرے گا، بھارت جی 20 کا حصہ ہے اور وہ بھی اس اجلاس میں شرکت کرے گا۔

سعودی عرب نے 20 ریال کا نیا نوٹ 24 اکتوبر کو جاری کیا، سعودی پریزیڈنسی کی طرف سے جی 20 کو یادگار بنانے کے لئے شائع کیے جانے والے نئے نوٹ میں مقبوضہ کشمیر کو ایک آزادریاست کے طور پر دکھایا گیا ہے جس پر بھارت سخت سیخ پا ہے اور جی 20 اجلاس میں شرکت نہ کرنے کی بھی دھمکی دی ہے۔

سعودی حکومت نے 20 ریال کے نئے نوٹ پر سارے کشمیر کو بھارت، پاکستان یا چین میں سے کسی کا حصہ نہیں دکھایا گیا بلکہ جموں اور مقبوضہ کشمیر اور آزاد کشمیر کو ایک الگ ریاست کے طور پر پیش کیا گیا ہے۔

بھارتی حکومت کے ترجمان انورنگ شریواستو نے کہا ہے کہ بھارت میں سعودی عرب کے سفارتخانے اور سعودی عرب میں بھارتی سفارتخانے کے ذریعے احتجاج کیا ہے انہوں نے یہ بھی کہا کہ جموں کشمیر اور لداخ بھارت کا حصہ ہے۔

برطانوی اخبار کے مطابق کرنسی نوٹ نقشے میں ہونے والے اس غیر واضح تبدیلی پر بھارت اس وقت واویلا کررہا ہے جب اس کے سعودی عرب سے تعلقات قدرے خوشگوار ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >