ارنب گوسوامی سکینڈل : بھارت میں ہنگامہ برپا،اپوزیشن کا انکوائری کا مطالبہ

ارنب گوسوامی سکینڈل بھارت میں ہنگامہ برپا کر دیا، اپوزیشن جماعتوں کا انکوائری کروانے کا مطالبہ

خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارتی متنازعہ اینکر ارنب گوسوامی کی لیک ہونے والی واٹس ایپ چیٹ نے بھارت میں ہنگامہ برپا کر دیا ہے، کانگریس سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں نے سوال اٹھاتے ہوئے کہ "ایک صحافی کو کیسے اتنی حساس معلومات تک رسائی دی جاسکتی ہے؟ معاملے کی مشترکہ پارلیمانی کمیٹی سے انکوائری کروانے کا مطالبہ کردیا ہے۔

بھارت کی سب سے بڑی اپوزیشن جماعت انڈین نیشنل کانگریس کے رہنما منیش تیواری نے کہا کہ اگر ارنب گوسوامی اسکینڈل میں سچائی ہے تو اس کا مطلب ہے کہ 2019 کے عام انتخابات اور بالاکوٹ فضائی حملوں کے درمیان براہ راست تعلق ہے، انہوں نے کہا کہ صرف انتخابات جیتنے کے لئے کیسے ملک کی قومی سلامتی کو داؤ پر لگایا جا سکتا ہے؟ مودی حکومت کا یہ اقدام ملک کے ساتھ غداری کے برابر ہے۔

اپوزیشن جماعت کانگریس سے کے رہنماؤں کی طرح بھارت کے سابق وزیر داخلہ پی چدم برم نے واٹس ایپ چیٹ میں ہونے والے تہلکہ خیز انکشافات پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر ایک بھارتی صحافی اور اس کے دوستوں کو بالاکوٹ حملہ کا تین دن پہلے سے علم تھا تو اس بات کی کیا گارنٹی ہے کہ اس بات کا پاکستانی انٹیلی جنس ایجنسیز کو پتا نہ ہو؟ مودی حکومت نے قومی سلامتی کو داؤ پر لگا دی ہے۔

اسی طرح ششی تھارور کا مذکورہ معاملے کی مکمل جانچ پڑتال کا مطالبہ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اس معاملے کی تہہ تک جانا چاہیے کہ کیسے ایک صحافی اپنے ملک کے رازوں کو تجارتی مقاصد کے لئے استعمال کر رہا ہے، آخر ملکی رازوں کو ایک صحافی کو دینے کا کیا مطلب ہے؟ جو بھارتی فوج کے 40 فوجیوں کی ہلاکت پر کہہ رہا ہے کہ ہم اسے اچھی طرح سے کیش کروائیں گے۔

دوسری جانب ارنب گوسوامی کی سکینڈل پر پاکستانی دفتر خارجہ کا اپنے ردعمل میں کہنا تھا کہ بھارتی اینکر ارنب گوسوامی کی واٹس ایپ چیٹ سے ہونے والے انکشافات اس بات کی تصدیق کر رہے ہیں کہ انتہا پسند مودی حکومت نے صرف انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے کے لیے اپنے لوگوں اور دنیا بھر کی آنکھوں میں دھول جھونکتے ہوئے فالس فلیگ آپریشن کرکے اس کا الزام پاکستان پر عائد کر دیا۔

خیال رہے کہ مقبوضہ کشمیر کے علاقے پلوامہ میں 14 فروری 2019 کو بھارتی فوج پر خودکش حملہ کیا گیا تھا جس کے نتیجے میں 40 بھارتی فوجی ہلاک ہوگئے تھے، جس کے بعد 26 فروری کو بھارتی فضائیہ نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بالاکوٹ میں فضائی حملہ کرتے ہوئے جیش محمد کے کیمپ ہونے کا جھوٹا دعویٰ کیا تھا۔

بھارتی طیاروں کی 26 فروری کو کی گئی لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کا جواب دیتے ہوئے پاک فضائیہ کے طیاروں نے 27 فروری کی صبح بھارت کو سرپرائز دیتے ہوئے دو بھارتی طیارے مار گرائے تھے جبکہ پاک فضائیہ نے اپنے جوابی حملے میں بھارتی فضائیہ کے ایئر کمانڈر ابھی نندن کو بھی گرفتار کیا تھا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >