مجھے فخر ہے اپنے دور حکومت میں کوئی نئی جنگ شروع نہیں کی، ڈونلڈ ٹرمپ

مجھے فخر ہے اپنے دور حکومت میں کوئی نئی جنگ شروع نہیں کی، بلکہ عوام سے کیے وعدے پورے کیے، ڈونلڈ ٹرمپ

تفصیلات کے مطابق امریکا کے 45ویں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے صدارتی مدت ختم ہونے پر وائٹ ہاؤس سے ان کا الوداعی پیغام جاری کر دیا گیا ہے، جس میں انہوں نے کہا ہے کہ مجھے خود پر فخر ہے کہ اپنے دور حکومت میں کوئی نئی جنگ شروع نہیں کی بلکہ عوام سے کیے گئے ہر وعدے کو پورا کیا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا وائٹ ہاؤس سے رخصتی سے قبل اپنے الوداعی پیغام میں کہنا تھا کہ ہم نے اپنے دور اقتدار میں وہی کیا جو ہم کرنے آئے تھے بلکہ اس سے بھی زیادہ ڈلیور کیا ہے، دنیا میں امن نئی جنگ شروع کرنے سے نہیں بلکہ حقیقت پسندی پر مبنی سفارتکاری کے ذریعے لایا جا سکتا ہے۔

اپنے الوداعی پیغام میں ڈونلڈ ٹرمپ کا مشرق وسطی میں حاصل کی گئی کامیابیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہم نے جرات مندانہ، اصولوں اور حقیقت پسندی پر مبنی سفارت کاری کے ذریعے مشرق وسطیٰ میں تاریخی معاہدے کر کے بہت سی کامیابیاں حاصل کی ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ آپ نے وائٹ ہاؤس سے جاری کیے گئے ہیں الوداعی پیغام میں ایران کی پاسداران انقلاب کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کی ڈرون حملے میں ہلاکت کو بھی اپنی کامیابی قرار دیا ہے، جس پر انہیں فخر محسوس ہوتا ہے۔

وائٹ ہاؤس سے جاری اپنے الوداعی پیغام میں ڈونلڈ ٹرمپ کا کیپیٹل ہل پر ہوئے حملے پر بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اس حملے سے تمام امریکی خوفزدہ ہوئے اور سیاسی تشدد ہر اس چیز پر حملہ ہے جس کو ہم بحیثیت امریکی سراہتے ہیں، ایک جمہوری ملک میں سیاسی تشدد کو کبھی برداشت نہیں کیا جا سکتا۔

واضح رہے کہ امریکا کے 45 ویں صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنی صدارتی مدت پوری کرنے کے بعد وائٹ ہاؤس سے رخصت ہو رہے ہیں اور نومنتخب صدر جوبائیڈن آج اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے جو اگلے 4 سال مدت کے لیے صدر منتخب ہو کر وائٹ ہاؤس منتقل ہو جائیں گے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکہ کی روایت کے مطابق امریکہ کا سبکدوش ہونے والا صدر نو منتخب صدر کی حلف برداری کی تقریب میں شرکت کرتا ہے، تاہم ڈونلڈ ٹرمپ اس روایت کو توڑتے ہوئے نو منتخب صدر جو بائیڈن کی حلف برداری کی تقریب میں شرکت نہیں کریں گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >