بھارت میں توہم پرستی کی انتہا،والدین نے بیٹیوں کی بَلی چڑھا دی

جنونیت، جہالت، توہم پرستی،درندگی بھارتی سرکار اور بھارتیوں کے خون میں رچ بس گئی ہے، جس کی وجہ سے والدین بھی جہالت کے ایسے اندھیرے میں ڈوبے ہیں کہ سننے والے دنگ رہ جائیں، بھارتی ریاست آندھرا پردیش میں توہم پرست ماں باپ نے مذہبی رسم کیلئے دو جوان بیٹیوں کو بلی چڑھادیا۔

قتل کا واقعہ آندھرا پردیش کے ضلع چتوڑ میں پیش آیا، پولیس کا کہنا ہے کہ تین منزلہ مکان سے دو جوان لڑکیوں کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں، جنھیں پوجا کے دوران تن سازی کے لیے استعمال ہونے والے گولوں یا ڈمبل سے وار کرکے قتل کیا گیا ہے،مقتول لڑکیوں کی عمر 22 اور 27 سال ہے۔

پولیس کے مطابق جائے وقوعہ پر رسم ادا کی جارہی تھی جس کے شواہد بھی ملے ہیں۔ مقتولہ لڑکیاں سرخ ساڑھیوں میں ملبوس تھیں اور انہیں قتل کرنے والے ان کے والدین سے ابتدائی تفتیش سے اندازہ ہوتا ہے کہ وہ انتہائی توہم پرست ہیں،پولیس افسر چیدانند ریڈی کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس لاک ڈاؤن کے باعث اس گھر میں کئی مہینوں سے کوئی باہر سے نہیں آیا تھا۔

گزشتہ شب واقعے کی اطلاع ملنے پر جب پولیس مکان میں داخل ہوئی تو لڑکیوں کے ماں باپ نے عجیب و غریب دعوے بھی کرنا شروع کردیے اور کہا کہ انہیں کچھ وقت دیا جائے تو وہ اپنی بیٹیوں کو دوبارہ زندہ کردیں گے۔

اس سے قبل والد نے اپنے دوست کو فون کرکے قتل کے واقعے کے بارے میں بتایا جس نے پولیس کو مطلع کردیا تھا، والدین کا کہنا ہے کہ ان کے گھر میں کئی طلسمات اور جادوئی واقعات رونما ہورہے ہیں اور بہت جلد ان کی مقتولہ بیٹیاں واپس آجائیں گی۔

پولیس حکام کے مطابق بیٹیوں کو مبینہ طور پر کسی رسم کے لیے بَلی چڑھانے والے والدین انتہائی تعلیم یافتہ ہیں۔ پولیس نے والدین کو گرفتار کرلیا ہے، اور مقتولین کی لاشوں کے پوسٹ مارٹم کی کارروائی شروع کردی گئی ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>