کسانوں کے احتجاج میں شدت،دہلی کے لال قلعے پر ترنگا اتار کر خالصہ کا پرچم لہرا دیا

بھارتی کسانوں کا احتجاج شدت اختیار کر گیا، دہلی کے لال قلعے پر قبضہ کرتے ہوئے ترنگا اتار کر خالصہ کا پرچم لہرا دیا

بھارتی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق انتہا پسند بھارتی حکومت اور مودی کی متنازع زرعی پالیسیوں کے خلاف بھارتی کسانوں کا احتجاج شدت اختیار کر گیا ہے، بھارتی کسانوں کے مودی مخالف احتجاج نے خطرناک موڑ لے لیا لاکھوں کسان ہزاروں ٹریکٹرز لے کر بھارتی دارالحکومت دہلی شہر میں داخل ہو گئے ہیں۔

کسانوں کے احتجاج میں شدت،دہلی کے لال قلعے پر ترنگا اتار کر خالصہ کا پرچم لہرا دیا

بھارتی دارلحکومت کے مرکز میں افراتفری پھیل گئی اور بھارتی کسانوں نے انتہا پسند مودی حکومت کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے "گو مودی گو” کے نعرے لگا دئیے ہیں، بھارتی کسانوں کا احتجاج یہیں تھما نہیں بلکہ مشتعل کسانوں نے دہلی میں واقعہ لال قلعہ پر قبضہ کرتے ہوئے لال قلعہ کے گنبد پر لگا ترنگا ہٹا کر اپنا خالصہ کا پرچم لہرا دیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق آج یومِ جمہوریہ کے موقع پر ہزاروں احتجاجی کسان اپنے ٹریکٹروں پر دارالحکومت دہلی میں داخل ہو کر بھارتی فوج کے مقابل ٹریکٹر پریڈ شروع کر دی، کسان مظاہرین نے دہلی کی سرحدوں سے ٹریکٹر پریڈ کی شروعات کی، رکاوٹوں کو توڑنے کے دوران بھارتی کسانوں اور دہلی پولیس کے درمیان جھڑپیں بھی ہوئی ہیں، جس میں ایک کسان ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق حکومت کی جانب سے جگہ جگہ رکاوٹیں کھڑی کی گئی ہیں لیکن کسان سب ہی رکاوٹیں توڑتے ہوئے آگے بڑھ رہے ہیں، ہریانہ، راجستھان، پنجاب، یوپی سمیت کئی ریاستوں سے قافلوں کی دارالحکومت آمد تا حال جاری ہے، کسان مظاہرین کی جانب سے مودی سرکار کے نئے زرعی قوانین کے سامنے جھکنے سے انکار کرتے ہوئے مودی سے زرعی قوانین واپس لینے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>