صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے الزام پر سعودی ولی عہد کے خلاف مقدمہ دائر

صحافیوں کی ایک عالمی تنظیم آر ایس ایف (رپورٹرز وِدآؤٹ بارڈر) نے سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل سے متعلق امریکی تحقیقاتی ادارے کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد جرمنی کی عدالت میں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے خلاف کریمنل کیس دائر کر دیا۔

سیکرٹری جنرل آرایس ایف کرسٹوف ڈیلائر کا کہنا ہے کہ جرمن پراسیکیوٹر جمال خاشقجی کے قتل کے معاملے پر ایکشن لیں کیونکہ کسی کو بین الاقوامی قوانین سے بالاتر نہیں ہونا چاہیے۔

آر ایس ایف کی جانب سے دائر کیے جانے والے کیس میں مؤقف اپنایا گیا ہے کہ سعودی ولی عہد کے اقدامات انسانیت کے خلاف جرائم پر مبنی ہیں۔

یاد رہے کہ کچھ روز قبل امریکی انٹیلی جنس ایجنسی سی آئی اے کی 2 سال کی تحقیقات کے بعد رپورٹ سامنے آئی ہے جس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ امریکی انٹیلی جنس اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے صحافی جمال خاشقجی کو پکڑنے یا قتل کرنے کے لیے ترکی کے شہر استنبول میں آپریشن کی منظوری دی۔

رپورٹ کے مطابق جمال خاشقجی سعودی سفارتخانے کی عمارت میں داخل ہوئے لیکن وہاں سے کبھی باہر نہیں نکلے۔ انہیں مارنے کے بعد لاش کے ٹکڑے ٹکڑے کر کے اسے ختم کیا گیا۔

دوسری جانب سعودی وزارت خارجہ نے امریکی تحقیقاتی رپورٹ کو مسترد کرتے ہوئے اسے غلط بیانی اور جھوٹ کا پلندہ قرار دیا ہے۔

  • اللہ اکبر
    مودی کے بغل بچے
    اور مسلمانوں کے مقابلے میںُ انکے دشمنُ مودی کو سپورٹ کرنے والے اور کشمیری مسلمانوں کے قتل عام پر خاموش رہ کر مودی کا ساتھ دینے والے ہر حرام زادے کا انجام اللہ کے حکمُ سے عبرت ناک ہوگا

  • امریکا کے ہاتھ محمد بن سلمان کو بلیک میل کرنے کا بنا بنایا ہتھکنڈہ لگ گیا ہے. ورنہ امریکی انتظامیہ کو ایک اور جھوٹ گھڑنا پڑتا


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >