کورونا سے پنجہ آزما بھارتیوں کو امریکی صدر جوبائیڈن نے مزید بری خبر سنا دی

بھارت میں کورونا کی دوسری لہر قہر بن کر نازل ہورہی ہے، جہاں ریکارڈ یومیہ اموات اور کیسز سامنے آرہے ہیں،جس کے بعد امریکا اور آسٹریلیا نے سفری پابندیاں لگادی ہیں،امریکا نے بھارت پر سفری پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کردیا، اطلاق 4 مئی سے ہوگا،امریکی صدر بائیڈن نے حکم نامے پر دستخط کردیے۔

وائٹ ہاؤس کی پریس سیکریٹری کا کہنا ہے کہ فوری طور پر بھارت سے سفری پابندی لگا رہے ہیں،اس پابندی کی وجہ بھارت میں بڑھتے کورونا کیسز اور وائرس کی مختلف اقسام کی موجودگی ہے،امریکا سے قبل برطانیہ بھی بھارت کو سفر کے حوالے سے ریڈ لسٹ میں شامل کر چکا ہے،آئرلینڈ نے بھارت سے آنے والوں پر قرنطینہ کی شرط رکھ دی ہے۔

دوسری جانب رواں ہفتے سفری پابندیوں کے بعد آسٹریلیا نے اقدامات مزید سخت کردیئے ہیں، بھارت سے آنے والے شہریوں کو پانچ سال قید اور جرمانے کی سزا ہو سکتی ہے،آسٹریلوی وزارت صحت نے کہا کہ یہ فیصلہ قرنطینہ میں موجود لوگوں کے تناسب کی بنیاد پر کیا تھا جنہیں بھارت سے کورونا ہوا۔

بھارت میں 9،000 آسٹریلوی باشندے ہیں جن میں سے 600 خطرے سے دوچار ہیں۔

نئے فیصلے کی خلاف ورزی پر پانچ سال قید کی سزا 66000 آسٹریلوی ڈالر جرمانہ یا دونوں کی سزا ہوسکتی ہے، وزارت صحت نے بتایا کہ اس فیصلے پر 15 مئی کو نظر ثانی کی جائے گی۔

بھارت میں یومیہ اموات اور کیسز میں ریکارڈ اضافہ سامنے آیا ہے، پہلی بار چار لاکھ انیس ہزار سے زائد افراد وائرس کا شکار ہوگئے، تین ہزارپانچ سو تیئس افراد زندگی کی بازی ہار گئے، دہلی اور مہاراشٹر کورونا کا گڑھ بنے ہوئے ہیں ،بھارت میں مثبت کیسز کی شرح اٹھارہ جبکہ دہلی میں بتیس فیصد تک جاپہنچی، دہلی میں مزید شمشان گھاٹ بنانے کی ہدایت کردی گئی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >