سابق امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے "کمیونیکیشنز” کے نام سے اپنا سوشل میڈیا پلیٹ فارم متعارف کرا دیا

سابق امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے "کمیونیکیشنز” کے نام سے اپنا سوشل میڈیا پلیٹ فارم متعارف کرا دیا

ڈونلڈٹرمپ نے ٹوئٹر اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کی جانب سے پابندی لگائے جانے کے بعد کمیونیکیشنز کے نام سے اپنا سوشل میڈیا پلیٹ فارم متعارف کرا دیا۔

کمیونیکیشنز نامی اس ویب پلیٹ فارم سے متعلق کہا جا رہا ہے کہ اس سے براہ راست سابق صدر کی جانب سے پیغامات شیئر کیے جائیں گے۔

ڈونلڈ ٹرمپ پر رواں سال جنوری میں کیپیٹل ہل حملے کےبعد ٹوئٹر، سنیپ چیٹ اور یوٹیوب سمیت دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کی جانب سے پابندی عائد کرتے ہوئے ان کے اکاؤنٹ معطل کیے گئے تھے۔

لوگ اس پلیٹ فارم میں ای میل اور فون نمبر کی مدد سے پوسٹ الرٹس کے لیے سائن اپ ہوسکیں گے اور مبینہ طور پر ان کو لائیک بھی کرسکیں گے۔

اسی طرح صارفین ڈونلڈ ٹرمپ کی پوسٹس کو فیس بک اور ٹوئٹر پر بھی شیئر کرسکیں گے۔

اس پلیٹ فارم میں ٹوئٹر سے شیئرنگ کا آپشن تو فی الحال کام نہیں کررہا مگر فیس بک کی جانب سے ضرور یہ سہولت فراہم کی گئی ہے۔ ڈونلڈ ٹرمپ بتدریج اپنے حامیوں سے براہ راست رابطہ بھی کرسکیں گے تاہم یہ واضح نہیں کیا گیا کہ ایسا کیسے ممکن ہوگا۔

ٹوئٹر کے ترجمان نے اس حوالے سے کہا ہے کہ عموماً ویب سائٹ ریفرنس کے ساتھ مواد کی شیئرنگ کی اجازت اس وقت تک ہوتی ہے جب تک وہ ٹوئٹر قوانین کے خلاف نہ ہو۔

یہ پلیٹ فارم اس وقت لانچ کیا گیا ہے جب فیس بک اور اس کے زیر ملکیت دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر سابق امریکی صدر کے اکاؤنٹس کو پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

ٹوئٹر اور فیس بک کی جانب سے سابق امریکی صدر کے اکاؤنٹس کو 8 جنوری کو اس وقت مستقل بین کیا گیا تھا جب واشنگٹن میں کیپیٹل ہل میں ان کے حامیوں نے ہنگامہ آرائی کی جس کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار سمیت 5 افراد ہلاک ہوگئے۔

کافی عرصے تک ٹوئٹر کے کمیونٹی رولز کی خلاف ورزی پر مبنی پوسٹس پر کمپنی نے کوئی کارروائی نہیں کی تھی مگر انتخابات اور کورونا وائرس سے متعلق پوسٹس پر وارننگ لیبلز کا اضافہ کیا گیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >