پاکستانی نژاد صادق خان ایک بار پھر لندن کے میئر منتخب

پاکستانی نژاد صادق خان دوبارہ میئر لندن منتخب ہو گئے، صادق خان نے حکومتی جماعت کے شان بیلی کو شکست دی۔

تفصیلا ت کے مطابق برطانوی دارالحکومت لندن کی عوام نے ایک بار پھر صادق خان پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے انھیں مئیر منتخب کر لیا ہے، صادق خان اگلے 3 سال لندن کے مئیر رہیں گے۔

اس سے قبل صادق خان 2016 میں مئیر آف لندن منتخب ہوئے تھے، کرونا وبا کے باعث بلدیاتی الیکشن ایک سال کی تاخیر سے ہوئے۔

صادق خان نے مئیر کے الیکشن میں مجموعی طور پر 1,206,034 ووٹ حاصل کئے۔ جبکہ ان کے حریف کنزرویٹیو امیدوار شان بیلی 9,77,601 ووٹ حاصل کر سکے۔ اس طرح صادق خان کو 55.2 فیصد جبکہ شان بیلی کو 44.8 فیصد ووٹ ملے۔

کامیابی کے بعد صادق خان نے لندن کی عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ لندن کے ہر شہری کا میئر ہوں، میں ایک امیگرنٹ کا بیٹا اور ورکنگ کلاس سے ہوں، میرا وعدہ ہے کہ مختلف قومیتوں کو قریب لاؤں گا۔

صادق خان کا کہنا تھا کہ ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ مل جل کر اور اتفاق سے رہیں، کورونا جیسی وبا کو ہم سب مل کر شکست دے سکتے ہیں، وبا کے بعد کے لندن کے مستقبل کو روشن بنائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ میں اپنی اہلیہ سعدیہ اور خاندان کا شکر گزار ہوں۔

خیال رہے کہ خان نے ونزورتھ کونسل میں 1994 سے 2006 تک بطور کونسلر خدمات سرانجام دیں جبکہ صادق خان 2005 میں لیبر پارٹی کے ٹکٹ پر رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے

صادق خان کے والدین 1968 میں پاکستان سے برطانیہ آئے تھے، صادق خان کے والد لندن میں بس ڈرائیور تھے۔

واضح رہے کہ صادق خان پہلی مرتبہ 2016 میں لندن کے مئیر منتخب ہوئے تھے۔ گزشتہ انتخابات میں جمائما خان کے بھائی اور وزیراعظم عمران خان کے سالے زیک گولڈ سمتھ مدمقابل تھے۔

اس الیکشن میں صادق خان نے 1,310,143 جبکہ زیک گولڈ اسمتھ نے 994,614 ووٹ حاصل کیے تھے۔ 2016 میں صادق خان نے 56.8 جبکہ مدمقابل زیک گولڈ اسمتھ نے 43.2 فیصد ووٹ حاصل کیے تھے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >