ایران کی سعودی عرب کے ساتھ براہِ راست مذاکرات کی تصدیق

تہران نے سعودی عرب اور ایران کے درمیان عوامی سطح پر پہلی بار ہونے والے براہِ راست مذاکرات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ مذاکرات کے نتائج کا انتظار کر رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ایران نے سعودی عرب سے اپریل کے آغاز میں ہونے والی بات چیت کے ادوار کی پہلی بار تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ مذاکرات کے نتائج کا انتظار کر رہے ہیں۔ کامیابی یا نتائج کے حوالے سے ابھی کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہوگا۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ نے نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ خلیج فارس خطے میں دو مسلم ممالک کے درمیان کشیدگی میں کمی دونوں ممالک اور پورے خطے کے لیے مفاد میں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مذاکرات کا مقصد خطے میں کشیدگی کم کرنا ہے جس کے لیے سعودی عرب کو ضمانت چاہیے۔ ہم دونوں ممالک کے درمیان موجود مسائل کے حل کا خیر مقدم کرتے ہیں اور ہم اس سلسلے میں ہر ممکن کوشش کریں گے۔

واضح رہے کہ 5 سال سے سفارتی تعلقات منقطع ہونے کے بعد گزشتہ ماہ دونوں ممالک کے وفد کے درمیان بغداد میں اہم ملاقاتوں کا انکشاف برطانوی نے کیا تھا تاہم دونوں ممالک نے پہلے ردعمل کے طور پر خبر کو بے بنیاد قرار دیا تھا۔

اپریل کے آخر میں سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے روایتی حریف ایران سے مفاہمانہ رویہ اپناتے ہوئے کہا تھا کہ تہران سے اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں۔

محمد بن سلمان نے ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ ایران کے حالات ابتر نہ ہوں بلکہ ہم چاہتے ہیں کہ ایران آگے بڑھے، خطے اور دنیا کو استحکام کی طرف لے جائے۔

  • پوچھنا یہ تھا کہ دونوں جانب جو مسلمان ان دو ملکوں کی عظمت کا علم اونچا رکھنے کے چکر میں جان سے گئے ان میں سے کون شہید ہے اور کون ہلاک؟


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >