فلسطینیوں پر تشدد کا خاتمہ ہو جانا چاہئے : یورپی یونین

یورپی یونین نے فلسطین میں اسرائیلی مظالم بند کرنے کا مطالبہ کردیا، اس حوالے سے یورپی یونین نے پیغام جاری کردیا، سربراہ وزارت خارجہ یورپی یونین جوزف بوریل نے بیان میں کہا کہ یورپی یونین کی ترجیح اور پیغام واضح ہے کہ اب تشدد ختم ہونا چاہیے، فلسطین میں جاری تشدد کے خاتمے کے لیے یونین کی جانب سے سفارتی کوششیں جاری ہیں۔

جوزف بوریل نے اسرائیل سے مطالبہ کیا کہ اب یقینی بنایا جائے کہ ہر طرف سے شہری محفوظ رہیں، اور بڑھتے تشدد کے واقعات فوری ختم کیے جائیں، بیان میں مزید کہا گیا کہ گزشتہ کئی دنوں سے ، نمائندہ برائے خارجہ امور اور سلامتی کی پالیسی ، یورپی کمیشن کے نائب صدر خطے میں ، خاص طور پر غزہ اور اس کے آس پاس کے انتہائی تشویشناک صورتحال کو دور کرنے کی کوششوں کی حمایت کرنے کے لئے اپنی کوشش کو جاری رکھے ہوئے ہیں۔

اپنے تمام رابطوں میں ، اعلی نمائندے بوریل نے حماس ’اور دیگر گروہوں کی’ اسرائیل میں شہری اہداف کے خلاف راکٹوں کی اندھا دھند فائرنگ کی مذمت کی۔ اعلی نمائندے نے زور دے کر کہا کہ اگرچہ اسرائیل کو اپنی آبادی کو اس قسم کے حملوں سے بچانے کا حق ہے ، لیکن اسے متناسب عمل کرنا چاہئے اور شہری ہلاکتوں سے بچنا چاہئے۔

انہوں نے زور دیا کہ اسرائیل فوری طور پر تشدد کے بڑھتے ہوئے واقعات کو ختم کرے ، اس کے مزید پھیلائو کو روکے اور ہر طرف سے شہریوں کو تحفظ فراہم کرے،بین الاقوامی انسانی ہمدردی کے قانون کے لئے مکمل احترام اور غزہ میں سب سے زیادہ ضرورت مند افراد کو مکمل انسانی ہمدردی کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ اس بنیادی وجہ کی طرف توجہ دی جانی چاہئے جو اس صورتحال کا باعث بنے۔ مقدس مقامات کی حیثیت کا احترام کرنے کی ضرورت ہے اور ان کے آس پاس کسی بھی طرح کے اشتعال انگیزی سے گریز کیا جائے۔

انہوں نے رواں ہفتے کے شروع میں فلسطینی صدر محمود عباس اور اسرائیلی وزیر خارجہ گبی اشکنازی سے تبادلہ خیال کیا ، مصر کے وزیر خارجہ سمح شوکری ، اردن کے وزیر خارجہ ایمن صفادی اور ترکی کے وزیر خارجہ میلوت چاؤش اوگلو سے بھی بات کی، ساتھ ہی موجودہ تشدد کو ختم کرنے میں یورپی یونین کے کردار پر روشنی ڈالی۔

اس تناظر میں یورپی یونین کی ترجیح اور پیغام دیا کہ اب تشدد ختم ہونا چاہئے۔ تنازعہ کی اصل وجوہات کی نشاندہی کرنے اور ایک سیاسی راستہ تلاش کرنے کی اشد ضرورت ہے ، جس سے بین الاقوامی سطح پر اتفاق رائے کے ساتھ دو ریاستوں کے حل کے لئے بامقصد مذاکرات کی واپسی کی اجازت مل سکتی ہے۔

فلسطین میں اسرائیلی دہشتگردی کا ساتواں دن ہوچکا ہے، غزہ میں مہاجرین کیمپ، الجلا ٹاور اور دیگر عمارتوں کو نشانہ بنایا گیا، ایک ہی خاندان کے دس افراد شہیدہوئے، تعداد ایک سو انچاس ہوگئی۔۔ اکتالیس بچے شامل ہیں، ایک ہزار سے زائد زخمی ہوگئے،اقوام متحدہ کی شہریوں کی اموات اور میڈیا دفاتر پر حملے کی مذمت کردی۔

  • فلسطینیوں کی انٹرنیشنل لیول پر حمایت یقیناً بڑھ سکتی ھے اگر حماس اپنے راکٹ ہوا میں فائر نہ کرے حماس کے راکٹوں کی فائرنگ سے فلسطینیوں کی پرامن جد جہدوجہد کو یقیناً دھچکا پہنچتا ھے
    عربی، ایرانی یا پاکستانی بن کر نہ سوچیں بلکہ انسانی حقوق کو دیکھیں آنکھوں سے عربی ، ،ایرانی،پاکستانی کی عینک اتار دیں۔ عرب بھی آرام سے بیٹھے ہیں ایرانی بھی آرام سے بیٹھے ہیں آگر کوئی مشکلات میں ہیں تو صرف اور صرف فلسطینی ہیں۔ بیشک اللّٰہ ہی سب ہر سے باخبر ھے

    • فلسطینی ناک بھی رگڑ لیں تو مغربی بلاک سے انہیں سپورٹ نہی مل سکتی۔ اسرائیل نے مسجد اقصی میں عبادت کرتے لوگوں پر گولیاں چلا کر اس مسئلے کا آغاز کیا تھا اس وقت تو حماس نے کوئی راکٹ فائر نہی کئے تھے۔ چائنا اور روس نے اس مسئلے پر کوئی بیان دینے سے گریز کیا ہے۔ مسلمان ممالک کی قوت اونٹ کے منہ میں زیرے سے بھی کم ہے تو رہ گئے مغربی ممالک تو ان کا ہیومن رائٹس بارے بیانیہ سیاسی مصلحتوں پر مبنی ہوتا ہے۔

        • جو بھی ہو تم نوجوان اک دم بکواس کر رہے ہو تمہارے جیسی سوچ کا اک
          نورداھڑی) بھی ہے جسے ہم لوگ بلکل
          (پسند نہیں کرتے(یو این
          نے اپنی پالیسی اس وقت دی ہے جب اسے پتا چل چکا ہے کے اسرائیل آپنا وجود کھونے جا رہا ہے اسرائیل انہی کی پیداوار ہے اور بریٹیش کی اور شاہ محمود قریشی بھی بکواس کر رہا ہے دو سٹیٹس کا مطلب سمجھتے ہو کے ہم اسرائیل کو تسلیم کر رہے ہیں بکواس کر رہے ہو تم لوگ یہ نا تو قا ئداعظم کا مئقف تھا اور نہ ای ہمارا

  • Allah is indeed the planner but Allah never help those who do not help themselves. Muslims need to unite and raise together and even fight together then results and Allah help will be there. Sorry to say but with our present imaan we are failures.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >