نیتن یاہو کے 12 سالہ ظالمانہ دور اقتدار کا خاتمہ، اسرائیلی پارلیمنٹ میں ہنگامہ آرائی

فلسطینیوں پر ظلم کے پہاڑ توڑنے والے اسرائیلی وزیراعظم کی حکومت کا خاتمہ ہوگیا,اسرائیلی پارلیمنٹ نے نئے اتحاد کو حکومت دینے کی منظوری دی جس کے بعد نیتن یاہو کے 12 سالہ دورِ حکومت کا خاتمہ ہوگیا۔

گزشتہ روز اسرائیلی پارلیمنٹ میں نئی اتحادی حکومت کے حوالے سے بحث بھی ہوئی تھی، جس میں آئندہ حکومت سیاسی جماعتوں کے اتحاد پر بنانے کا فیصلہ کیا گیا کیونکہ عددی اکثریت کے لیے ایک نشست کی ضرورت ہے، جو اتحاد سے ہی ممکن ہے۔

دائیں بازو کی سیاسی جماعت کے رہنما نفتلی بینٹ کو اسرائیل کا اگلا وزیر اعظم منتخب کیا گیا۔ نیتن یاہو کو اب تک سب سے لمبے عرصے تک وزیراعظم رہنے کا اعزاز حاصل تھا۔

نیتن یاہو نے اپنے دورِ حکومت کے خاتمے کو سازش قرار دیتے ہوئے سیاسی جماعتوں کے اتحاد کو ’ہتھیار ڈالنے والا، دھوکا اور خطرناک قرار دے دیا‘۔ انہوں نے مزاحمت کا اعلان بھی کیا ہے۔

نیتن یاہو کی تقریر کے دوران پارلیمنٹ میں ہنگامہ آرائی بھی دیکھنے کو ملی اور اپوزیشن جماعتوں کے ارکان نیتن یاہو کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے۔

وہ پہلے ایسے وزیر اعظم ہیں جن کے دور اقتدار میں ہی ان کے خلاف عدالتی کارروائی شروع ہوئی نیتن یاہو کو چاہنے والے انھیں ’’کنگ بی بی‘‘ اور ‘‘جادوگر‘‘ کہتے ہیں۔

نیتن یاہو 1949 میں ایک ممتاز تاریخ اور صہیونی ورکر بین زیان کے ہاں پیدا ہوئے۔ جب ان کے والد کو امریکہ میں ایک تعلیمی عہدے کی پیشکش ہوئی تو ان کا خاندان 1963 میں امریکہ منتقل ہو گیا۔

نیتن یاہو اٹھارہ برس کی عمر میں اسرائیل واپس گئے اور اپنی زندگی کے پانچ برس فوج میں گزارے۔ وہ اسرائیلی فوج کے ایلیٹ کمانڈو فورس سیرت میتاکل کا حصہ رہے ہیں۔ وہ کمانڈو کے اس دستے کا حصہ تھے جس نے 1968 ایئرپورٹ پر حملہ کا اور وہ 1973 کی جنگ میں بھی شریک رہے ہیں۔

فوجی خدمات کے بعد وہ واپس امریکہ گئے جہاں انھوں نے میساچیوسٹ انسٹیٹوٹ آف ٹیکنالوجی سے ماسٹر ڈگری حاصل کی۔

جب نیتن یاہو 1988 میں واپس اسرائیل آئے تو انھوں نے سیاست میں قدم رکھا اور اسرائیلی پارلیمنٹ کینسٹ کے ممبر منتخب ہوئے اور پھر نائب وزیر خارجہ مقرر ہوئے۔

وہ جلد ہی لیخود پارٹی کے چیئرمین بن گئے اور 1996 میں پہلی بار وزیر اعظم منتخب ہوئے۔ انھیں اسرائیل کا سب سے کم عمر وزیر اعظم ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >