اقتدار چلا گیا مگر سابق اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کرسی کو نہ بھول سکے

بینجمن نیتن یاہو 12 سالہ اسرائیلی وزارت عظمیٰ کے عہدے سے فارغ ہونے کے بعد پارلیمان میں آئے تو وزیراعظم کی نشست پر براجمان ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق 71 سالہ سابق اسرائیلی وزیراعظم بن یامین نتن یاہو کے وزارت عظمیٰ سے ہٹنے کے بعد ان کا 12 سالہ دور اپنے اختتام کو پہنچ گیا۔  ماضی میں نتن یاہو کے سابق دائیں بازو اتحادی رہنے والے اور اب سخت حریف نفتالی بینیت کے نئے وزیر اعظم منتخب ہوئے ہیں۔ نتن یاہو اب بھی لیکود پارٹی اور پارلیمان میں حزب اختلاف کے سربراہ ہوں گے۔

نئے وزیراعظم کے انتخاب کے بعد ہونے والے پارلیمانی اجلاس میں نتن یاہو شریک ہوئے۔ اجلاس شروع ہونے سے قبل جب سب ارکان اپنی اپنی نشستوں پر بیٹھ رہے تھے تو نتن یاہو اپنی سابق نشست پر براجمان ہو گئے۔

اسپیکر اسمبلی نے نشست پر آکر ان کو یاد دلایا کہ یہ نشست وزیراعظم کی ہے جو اب انہیں خالی کرنی پڑے گی۔ جس پر اپنی خفت کو چھپاتے ہوئے نتن یاہو حزب اختلاف کے سربراہ کے لئے مخصوص کی گئی نشست پر جا کر بیٹھ گئے۔

واضح رہے کہ پارلیمان میں اتوار کو ہونے والا ووٹ نفتالی بینیت نے 60 اور 59 کے انتہائی کم فرق سے جیتا۔ ان کے انتخاب سے ملک میں دو سالہ جاری سیاسی بحران کا خاتمہ ہوا ہے جس دوران اب تک ملک میں چار انتخابات ہو چکے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >