کینیڈا میں اسلاموفوبیا کا ایک اور واقعہ، 2 افراد کی مسجد میں گھسنے کی کوشش

کینیڈا میں اسلاموفوبیا کا ایک اور واقعہ، 2 افراد کی مسجد میں گھسنے کی کوشش

کینیڈا میں ایک ماہ کے دوران دوسرا اسلاموفوبیا کا واقعہ پیش آیا ہے، تازہ ترین واقعہ میں ایک خاتون اور مرد نے مسجد میں گھسنے اور انتظامیہ کو ڈرانے دھمکانے کی کوشش کی ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق واقعہ کینیڈا کے دارالحکومت ٹورنٹو کے علاقے اسکاربورو میں واقع اسلامک انسٹی ٹیوٹ میں پیش آیا ، عینی شاہدین کے مطابق ایک خاتون اور ایک مرد نے زبردستی مسجد میں گھسنے کی کوشش کی، روکنے پر انتظامیہ کو سنگین نتائج اور مسجد کو دھماکہ خیز مواد سے اڑانے کی دھمکیاں بھی دیں۔

تاہم مسجد میں موجود افراد نے فوری طور پر پولیس کو اطلاع کی جس پر پولیس نے ان دونوں افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔
ٹورنٹو پولیس کے مطابق اسلام انسٹی ٹیوٹ سے دوپہر12 بجے شکایت موصول ہوئی، فوری کارروائی کرتے ہوئے دونوں افراد کو حراست میں لیا گیا، تاہم ان کے قبضے سے کسی قسم کا دھماکہ خیز مواد یا کوئی اسلحہ برآمد نہیں ہوا ہے۔

پولیس کی جانب سے دونوں افراد کے نشے میں ہونے کا امکان بھی ظاہر کیا گیا ہے، تاہم جوڑے سے کی جانے والی تفتیش یا ان کی شناخت کے حوالے سے ٹورنٹو پولیس نے مزید تفصیلات جاری نہیں کی ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے کینیڈا میں اسلاموفوبیا کا ایک افسوس ناک واقعہ پیش آیا تھا جس میں ایک شدت پسند شخص نے مذہبی منافرت کی بنیاد پر ایک پاکستانی مسلمان خاندان کو اپنے ٹرک کے نیچے روند کر قتل کردیا تھا، کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے اس واقعہ کو دہشت گردی قرار دیا تھا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >