مودی کے خلاف ٹویٹ کرنیوالا صحافی نوکری سے ہاتھ دھوبیٹھا

بھارتی وزیراعظم نریندرمودی سے متعلق ٹویٹ مہنگا پڑگیا۔۔ بھارتی صحافی نجی چینل کی نوکری سے فارغ

پاکستانی صحافی اکثر سنسرشپ کا رونا روتے ہیں اور ٹی وی چینلز اور ٹویٹر پر وزیراعظم عمران خان پر تنقید کرتے اور کھری کھری سناتے ہیں لیکن بھارت میں نجی چینل آج تک کے صحافی شیام میرا سنگھ کو مودی سے متعلق ٹویٹ کرنا مہنگا پڑگیا جس پر
انڈیا ٹوڈے انتطامیہ نے شیام میرا سنگھ کو نوکری سے نکال دیا۔ خیال رہے کہ آج تک ٹی وی چینل انڈیا ٹوڈے گروپ کے انڈر ہے۔

اپنے ٹوئٹر پیغام میں بھارتی صحافی نے دو ٹویٹس شئیر کرتے ہوئے لکھا کہ مودی سے متعلق ان دو ٹویٹس کی وجہ سے آج تک (انڈیا ٹوڈے گروپ ) نے مجھے نوکری سے فارغ کردیا ہے۔

بھارتی صحافی نے افغانستا ن میں قتل ہونیوالے صحافی دانش صدیقی کی موت پر کچھ نہ کہنے پر مودی سرکار کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا اور ہندوتوا اور مودی سرکار سے متعلق سخت الفاظ کا استعمال کیا تھا ۔

بھارتی صحافی نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا تھا کہ جو کہتے ہیں کہ وزیر اعظم کی عزت کرو۔ انہیں چاہئے کہ پہلے مودی سے کہیں کہ وزیر اعظم کے عہدے کا احترام کرے۔

نوکری سے فارغ ہونے پر ردعمل دیتے ہوئے بھارتی صحافی نے کہا کہ میں بار بار دہرانا چاہتا ہوں۔۔۔جی ہاں! مودی ایک بے شرم وزیر اعظم ہیں

شیام میرا سنگھ نے اپنا ٹرمینیشن لیٹر بھی شئیر کیا اور ان لیٹرز میں شیام سنگھ کے دو ٹویٹس بھی شامل تھے جو انہوں نے مودی کے خلاف کئے تھے اور جس کی بناء پر اسے نوکری سے فارغ کیا گیا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>