کورونا کس انڈسٹری کیلئے سونے پر سہاگا بن کر آیا؟

 کورونا کس انڈسٹری کیلئے سونے پر سہاگا بن کر آیا؟

کورونا وائرس نے دنیا بھر کے بیشتر ممالک اور ان کی معیشتوں کو نقصان پہنچایا یا شدید متاثر کیا۔ جہاں لاک ڈاؤن لگنے سے کئی ممالک کے مزدور طبقہ شدید متاثر ہوا بلکہ بھارت جیسے ملک میں مزدور صحت کی سہولیات کی عدم دستیابی پر خودکشیوں تک مجبور ہو گئے۔

دوسری جانب کچھ شعبے اور انڈسٹریز ایسی بھی ہیں جنہوں نے اس صورتحال سے بھرپور فائدہ اٹھایا اور یہ عرصہ ان کے لیے سونے پر سہاگا ثابت ہوا ہے۔ ان میں سرفہرست کاسمیٹکس انڈسٹری ہے۔ اس شعبے نے اس دوران اتنی ترقی کی ہے کہ کاسمیٹکس سرجنز نے اس عرصے کو زوم بوم کا نام دیا ہے کیونکہ اس دوران لوگوں نے اپنی ظاہری شکل و صورت کو بہتر بنانے کی بھرپور کوشش کی ہے۔

ڈاکٹروں کے مطابق چونکہ لوگوں کو لاک ڈاؤن کے دوران اپنے کام کی جگہوں پر جانے سے متعلق پابندیوں کا سامنا تھا اس لیے زیادہ تر لوگ زوم میٹنگز اور کیمرے کے سامنے بیٹھ کر کام کرتے تھے۔ اس لیے لوگوں نے اپنی شکل وصورت کو بہتر بنانے کے لیے کاسمیٹکس تبدیلیوں کا سہارا لیا۔

 کورونا کس انڈسٹری کیلئے سونے پر سہاگا بن کر آیا؟

ماہرین کا خیال ہے کہ کورونا نے جہاں کئی شعبوں کو ٹھپ کر کے رکھ دیا ہے وہیں کاسمیٹکس سمیت چند دیگر شعبے ایسے بھی ہیں جن میں پہلے کی نسبت بہت بہتری دیکھنے میں آئی ہے۔ اس دوران لوگوں کی عمومی رویوں میں بہتری آئی یا لوگوں نے انہیں بہتر بنانے کے بارے میں سوچا۔

 کورونا کس انڈسٹری کیلئے سونے پر سہاگا بن کر آیا؟

کاسمیٹکس انڈسٹری سے وابستہ افراد کا کہنا ہے کہ کیمرے سے ہونے والی کانفرنسوں نے افراد کو بہتر روپ اپنانے کی جانب راغب کیا ہے۔ کیونکہ وہ گھنٹوں کیمرے کے سامنے ہوتے ہیں۔ امریکا میں ہونے والے ایک حالیہ سروے میں چھیاسی فیصد افراد نے بتایا کہ انہیں زوم کانفرنسز کی وجہ سے کاسمیٹک سرجریز کی ضرورت محسوس ہوئی ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>