بابری مسجد کو شہید کرنے کے بعد مسلمان ہونے والے سابق کارسیوک پراسرار طور پر جاں بحق

بابری مسجد کو شہید کرنے کے بعد مسلمان ہونے والے سابق کارسیوک پراسرار طور پر جاں بحق

بابری مسجد کو شہید کرنے والے افراد میں شامل سابق کارسیوک اور آر ایس ایس کے سابق کارکن بلبیر سنگھ جنہوں نے اسلام قبول کرلیا تھا، ان کی پرسرار طور پر موت واقع ہوگئی ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام قبول کرنے کے بعد محمد عامر کا نام رکھنے والے سابق کارسیوک کی لاش بھارتی شہر حیدرآباد میں حافظ بابا نگر کے علاقے میں ان کی رہائش گاہ سے برآمد ہوئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق ان کے گھر سے تعفن پھیلنے پر پڑوسیوں نے پولیس کو آگاہ کیا، پولیس گھر کا دروازہ توڑ کر اندر داخل ہوئی تو وہاں محمد عامر عرف بلبیر سنگھ کی لاش برآمد ہوئی۔ پولیس کے مطابق موت کی وجوہات کے حوالے سے تحقیقات جاری ہیں فی الحال اس حوالے سے کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہوگا۔

واضح رہے کہ بھارتی ریاست اترپردیش میں واقع تاریخی بابری مسجد کو 1992 میں شہید کرنے والوں میں بلبیر سنگھ بھی شامل تھے، کچھ عرصے بعد انہوں نے طبیعت خرابی کے بعد اسلام قبول کیا اور اپنا نام محمد عامر رکھا، انہوں نے اسلام قبول کرنے کے بعد ملک بھر میں 100 سے زائد مسجدوں کی تعمیر کا عزم کیا۔

انہوں نے اپنے اس عزم کو عملی جامہ بھی پہنایا اور 1994 میں ہریانہ میں مدینہ مسجد کے نام سے مسجد تعمیر کی، موت کے وقت وہ حیدرآباد شہر میں اپنی 59ویں مسجد کی تعمیر میں مصروف تھے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >