جنرل سلیمانی کی ہلاکت پر عمران خان نے ٹرمپ کو انکا کارنامہ قرار دیا؟ ٹرمپ کا دعویٰ

امریکہ کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان نے ایرانی افواج کے سپریم کمانڈر قاسم سلیمانی کی ہلاکت کو میرے دور حکومت کا واحد یادگار کارنامہ قرار دیا تھا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کے دور حکومت کے حوالے سے کتاب لکھنے والے واشنگٹن کے 2 رپورٹروں فلپ رکر اور کیرول لیوننگ نےجنہوں نے وائٹ ہاؤس میں ڈونلڈ ٹرمپ کی حکومت کے آخری سال کے حوالے سے ‘I can Fix It Alone – Donald Trump’s Catastrophic Final year کتاب لکھی ہے جس میں یہ دعویٰ کیا ہے۔

کتاب کے مصنفین کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے عمران خان کے بارے میں یہ ریمارکس اپنے فلوریڈا والے مکان میں ایک انٹرویو کے دوران دیئے۔ فلپ رکر اور کیرول لیوننگ کے مطابق ٹرمپ نے ان کو بتایا کہ سلیمانی کی ہلاکت حیرت انگیز واقعہ تھا ہم اس کیلئے ایک سال سے بھی زیادہ عرصے سے منتظر تھے۔

فلپ رکر اور کیرول لیوننگ کے مطابق ٹرمپ نے بتایا کہ انہوں نے پاکستان کے وزیراعظم عمران خان سے اس حوالے سے بات کی، سابق امریکی صدر نے بتایا کہ وہ عمران خان کے ساتھ ہیں وہ بہترین ایتھلٹ ہیں انہوں نے کہا کہ کیا آپ جانتے ہیں کہ وہ کرکٹ کے جادوگر ہیں، وہ عظیم لیڈر اور خوبصورت انسان ہیں میں ان سے مل چکا ہوں۔

کتاب لکھنے والے مصنفین کے مطابق ٹرمپ نے عمران خان کی تعریفیں کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے سلیمانی کی ہلاکت پر کہا تھا کہ یہ ٹرمپ کی زندگی کا اب تک کا سب سے بڑا کام ہے، مصنفین نے اس کے بعد کتاب میں اضافہ کیا ہے کہ اس سے ٹرمپ کی ڈرامہ کرنے اور شیخیاں بگھارنے والی خاصیت کا پتہ چلتا ہے۔

یاد رہے کہ جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت اپنی نوعیت کا دوسرا بڑا واقعہ تھاجس کے حوالے سے ٹرمپ نے اقتدار سنبھالنے کے 3 ماہ کے اندر اندر ہلاک کرنے کے احکامات جاری کئے تھے۔ اس کے علاوہ امریکی افواج نے26 اکتوبر2019 کو داعش کے رہنما ابو بکر البغدادی کو بھی مارا تھا۔

فلپ رکر اور کیرول لیوننگ نے لکھا ہے کہ وائٹ ہاؤس کے اندر کی ایک مخبوط اور لمحہ بہ لمحہ بدلتی ہوئی فضا تھی ٹرمپ کے گرد موجود کلیدی لوگوں میں ڈاکٹر،جنرلز، سینئر مشیر اور ٹرمپ کی فیملی کے ارکان شامل تھے۔

کتاب میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ٹرمپ جارج فلائیڈ کے قتل کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال اور اس پر ہونے والے احتجاج کو فوجی طاقت کی مدد سے کچلنا اور اپنا آئندہ الیکشن بچانا چاہتے تھے کیونکہ عموماً گزشتہ صدور کا آخری سال صرف آڈٹ کرانے اور معاملات کو سمیٹنے میں گزر جاتا ہے مگر ٹرمپ کا ایسا ارادہ نہیں تھا وہ ابھی اور حکومت کرنے کے موڈ میں تھے۔

  • لیکن اگر کوئی بھی کتا انڈیا کا پالتو کتا بن کر پاکستان میں دہشت گردوں کا سہولت کار بنے پاکستانیوں کو دہشت گردوں کے ہاتھوں مروانے ایسے کتے کو کتے کی موت ہی مرنا چاہیے کلبوشن سے پاکستان میں دہشت گردی کرانے والا کتا بھی دہشت ہی ہے اور دہشت گرد کوتو مرنا ہی ہوتا ہے

    • کتا ہی کتوں کی زبان بول سکتا ہے مفت میں بکے ہوئے کتوں کا کام بڑے شیطان کی پوجا کرنے کے سوا ہو ہی کیا سکتا ہے۔ زرد صحافت کے علمبردار روزنامہ سیاست نے تیری کمنٹ نشر کرکے خود کو تجھ کتے کے ہم پلہ قرار دیا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >