برطانوی عدالت کا نیب کو 10 اگست تک براڈ شیٹ کو 12 لاکھ ڈالر ادا کرنے کا حکم

برطانوی عدالت کا نیب کو 10 اگست تک براڈ شیٹ کو 12 لاکھ ڈالر ادا کرنے کا حکم

برطانوی عدالت عالیہ نے نیب اور حکومتِ پاکستان کو اثاثہ برآمدگی فرم براڈ شیٹ ایل ایل سی کو 10 اگست کی شام ساڑھے4 بجے تک12 لاکھ 22 ہزار 37 ڈالر اور 110 پاؤنڈز کے ساتھ ساتھ نیب کے وکیل کو دعویدار کی درخواست کی لاگت کے 26 ہزار 296 پاؤنڈ ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔

عدالت نے فیصلے میں کہا کہ نیب کی لاء فرم ایلین اینڈ اووری حکومتِ پاکستان سے موصول ہونے والے فنڈز 13 اگست کی شام تک براڈشیٹ کی لا فرم ایل ایل سی سولیسٹرز کروویل اینڈ مورنگ کو ادا کرے گی۔ اگر حکومت پاکستان اور نیب نے اپنے وکلا کو براڈشیٹ کو ادائیگی کے لیے رقم فراہم نہ کی تو براڈشیٹ کے وکیل یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ (یو بی ایل یو کے) کو نوٹیفائی کریں گی اور پھر بینک اس رقم کی ادائیگی کرے گا۔

یاد رہے کہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف نے تقریباً 20 سال قبل سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے اہل خانہ کی غیر ملکی جائیدادوں کی تحقیقات کے لیے براڈشیٹ سے معاہدہ کیا تھا۔ دسمبر 2018 میں برطانوی عدالت نے واحد ثالث کے طور پر حکومت پاکستان کو براڈشیٹ کو 2 کروڑ 20 لاکھ ڈالر کی ادائیگی کا حکم دیا تھا۔

جولائی 2019 میں حکومت نے اس فیصلے کے خلاف اپیل کی تھی جو ناکام رہی، ثالثی عدالت کے مطابق پاکستان اور نیب نے غلط طور پر براڈشیٹ کے ساتھ اثاثہ برآمدی کا معاہدہ ختم کیا اور کمپنی کو نقصان کا ہرجانہ ادا کیے جانے کا حکم دیا۔ جس کے بعد براڈشیٹ اس رقم کی ادائیگی کے لیے 6 ماہ تک نیب عہدیداران کے علاوہ اٹارنی جنرل کے ساتھ بات چیت کرتی رہی۔

اکتوبر 2019 میں کاوے موسوی نے 2 کروڑ 20 لاکھ ڈالر ادائیگی کا مطالبہ کرنے کے لیے شہزاد اکبر سے ملاقات کی جنہوں نے قومی خزانے کا نقصان کم کرنے کے لیے رعایت طلب کی۔ کاوے موسوی نے رعایت کی درخواست مسترد کردی اور ادائیگی پر عملدرآمد کے لیے عدالت سے رجوع کیا جس پر کمپنی دسمبر 2019 میں تھرڈ پارٹی ڈیٹ آرڈر حاصل کرنے میں کامیاب رہی، جس نے حکومت پاکستان کو 2 کروڑ 90 لاکھ ڈالر بمع سود براڈشیٹ کو ادا کرنے پر مجبور کیا۔

اس وقت سے لے کر اثاثہ برآمدگی کمپنی اپنی خدمات کی ادائیگی محفوظ بنانے کے لیے برطانیہ میں حکومتِ پاکستان سے تعلق رکھنے والے متعدد اداروں کو ہدف بنا چکی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >