امریکا کا روسی سفارتکاروں کے ویزوں میں تجدید سے انکار، ملک چھوڑنے کا حکم

امریکا نے اپنے ملک میں موجود 24 روسی سفارتکاروں کو کے ویزہ میں تجدید کی درخواست مسترد کرتے ہوئے انہیں ملک چھوڑنے کا حکم دیدیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکا میں تعینات روسی سفیر اناتولی آنتونوف نے اس فیصلے کو جوابی کارروائی قرار دیا اور کہا کہ امریکا نے سفارتکاروں کو 3 ستمبر سے پہلے ملک چھوڑنے کا حکم دیدیا ہے۔

برطانوی جریدے کو انٹرویو دیتے ہوئے اناتولی آنتو نوف کا کہنا تھا کہ امریکا بغیر کسی جواز کے روسی سفارتکاروں کے ساتھ امتیازی سلوک برت رہا ہے، روس کے امریکا میں تعینات تمام سفارت کار بغیر کسی متبادل سے ملک چھوڑنے پر مجبور ہوگئے ہیں نجانے کیوں اچانک امریکی انتظامیہ نے ویزوں کےا جراء کو اتنا مشکل بنادیا ہے۔

روسی سفیر کے ان الزامات کے جواب میں ترجمان امریکی محکمہ خارجہ نیڈ پرائس کا کہنا تھا کہ یہ تمام الزامات مسترد کیے جاتے ہیں، روسی سفارتکاروں کے ویزوں میں تجدید کو مسترد کرنے میں نہ تو کچھ نیا ہے اور نہ ہی یہ انتقامی کارروائی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ معمول کی بات ہے،امریکا میں مقیم روسیوں کو ہر 3 سال بعد اپنے ویزوں کی تجدید کیلئے درخواست دینا ہوتی ہے، جن کی مناسب جانچ پڑتال کے بعد ان کی تجدید کا درخواستوں کو مسترد کرنے کا فیصلہ کیا جاتا ہے۔

غور طلب بات یہ ہے کہ ترجمان محکمہ خارجہ نے اپنی وضاحت کے دوران اس بارے میں کوئی جواب نہیں دیا کہ وہ کون سے عوامل تھے جن کی بنیاد پر ایک ساتھ تمام روسی سفارتکاروں کے ویزوں میں تجدید کی درخواستیں مسترد کی گئیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >