بالی ووٖڈ اداکارہ کنگنا کو کس معروف بھارتی ڈائریکٹر سے چپل پڑی ؟ انکشاف

بالی ووڈ اداکارہ کنگنا رناوت اپنے متنازع بیانات کی وجہ سے خبروں کی زینت بنی رہتی ہیں، جس کی وجہ سے انہیں تنقید کا سامنا بھی رہتا ہے، لیکن کوئی نہیں جانتا کہ اپنے فلمی کیریئر میں کنگنا رناوت چپل بھی کھاچکی ہیں، جی ہاں کسی فلمی سین کی بات نہیں ہورہی بلکہ کنگنا حقیقت میں بھی چپل کھاچکی ہیں۔

کنگنا رناوت کی بڑی بہن رنگولی چنڈل نے اداکارہ کے حوالے سے انکشاف کیا تھا، بڑی بہن نے انکشاف کیا کہ ایک معروف بھارتی ڈائریکٹر نے کنگنا کو چپل پھینک کر ماری تھی،رنگولی چنڈل نے بتایا کہ 2006 میں ’ وہ لمحے‘ فلم کی اسکریننگ کے دوران مہیش بھٹ نے کنگنا کو چپل پھینک کر ماری تھی۔

کنگنا کی بہن نے بتایا تھا کہ مہیش بھٹ نے کبھی کنگنا کو بریک نہیں دیا بلکہ انوراگ باسو نے دیا، مہیش بھٹ اس وقت پروڈکشن ہاؤس کے مالک نہیں بلکہ تخلیقی ہدایت کارکے طور پر وہاں کام کرتے تھے اور فلم ’وہ لمحے‘ کے بعد اداکارہ نے وہاں کام کرنے سے انکار کردیا تھا لیکن جب کنگنا فلم کے پریمیئر کے لیے تھیٹر گئیں تو مہیش بھٹ نے انہیں چپل پھینک کر ماری اور انہیں پریمیئر میں شرکت کی اجازت نہیں دی۔

کہانی کچھ یوں ہیں کہ دوسال قبل مہیش بھٹ کی اہلیہ سونی راز دان نے ٹوئٹ میں کہا تھا کہ ان کے شوہر مہیش بھٹ نے کنگنا رناوت کو بالی وڈ میں آنے کا موقع دیا اور اب کنگنا ان کے شوہر اور بیٹی کو ہی نشانہ بنارہی ہیں،جس پر کنگنا کی بہن رنگولی چنڈل نے دعویٰ کیا تھا کہ وہ لمحے فلم کی اسکریننگ کے دوران مہیش بھٹ نے کنگنا کو چپل پھینک کر ماری تھی۔

اداکارہ کی بہن نے مزید واضح کیا تھا کہ مہیش بھٹ نے کبھی کنگنا کو بالی ووڈ میں موقع فراہم نہیں کیا بلکہ انوراگ باسو نے دیا، مہیش بھٹ اس وقت پروڈکشن ہاؤس کے مالک نہیں بلکہ تخلیقی ہدایت کا رکے طور پر وہاں کام کرتے تھے اور فلم ’وہ لمحے‘ کے بعد اداکارہ نے وہاں کام کرنے سے انکار کردیا تھا لیکن جب کنگنا فلم کے پریمیئر کے لیے تھیٹر گئیں تو مہیش بھٹ نے انہیں چپل پھینک کر ماری اور انہیں پریمیئر میں شرکت کی اجازت نہیں دی۔

کنگا رناوت کی مہیش بھٹ اور عالیہ بھٹ کے ساتھ جنگ اس وقت شروع ہوئی جب بالی ووڈ میں سشانت سنگھ کے انتقال کے بعد نیپٹوزم کا معاملہ شروع ہوا اور کنگنا رناوت نے عالیہ بھٹ کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا، جس پر مہیش بھٹ بھی بیٹی کی حمایت میں میدان میں آگئے تھے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>