ایسا ممکن نہیں کہ طالبان ماضی کی طرح حکومت بناسکیں، افغان صدر اشرف غنی

افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ ایسا سوچنا کہ طالبان ماضی کی طرح ملک حکمرانی کرسکتے ہیں یہ غلط ہوگا، اب ایسا ممکن نہیں ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق افغانستان کے صدارتی محل میں اشرف غنی نے صوبائی کونسلز کے رابطہ اراکین سے ملاقات کی، اس موقع پر صدر اشرف غنی نے ملک میں طالبان کے بڑھتے حملوں کے پیش نظر سیکیورٹی فورسز میں شمولیت کے عمل کو آسان اور سہل بنانے کے عزم کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ تین ہفتوں میں افغان سیکیورٹی فورسز میں مزید تین ہزار اہلکار بھرتی کیے جائیں گے، صوبائی کونسلز کے نمائندگان اپنے اپنے علاقوں میں شہریوں کو فورسز میں بھرتیوں کیلئے ترغیب دیں۔

اشرف غنی نے مزید کہا کہ یہ سوچنا کہ طالبان ماضی کی طرح افغانستا ن میں حکومت قائم کرسکتے ہیں ایک غلطی ہوگی، اب ایسا ممکن نہیں ہے،طالبان ملک میں انتشار اور تفریق پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں تاہم ان کی یہ کوششیں ناکام بنائیں گے۔

واضح رہے کہ افغانستان میں طالبان اور افغان فورسز کے درمیان جنگ میں شدت آ گئی، جمعرات کے دن افغان دارالحکومت کابل دھماکوں اور فائرنگ سے گونج اٹھا۔ پہلا دھماکا قائم مقام وزیر دفاع جنرل بسم اللہ کی رہائش گاہ کے باہر ہوا جس کے بعد مسلح افراد وزیردفاع بسم اللہ کے گھر میں داخل ہوگئے۔ دو گھنٹے کے اندر ایک اور زور دار دھماکہ ہوا، وزیردفاع کا کہنا تھا کہ حملےمیں میرے گھر کے کچھ گارڈز زخمی ہوئے۔

افغان حکام کے مطابق طالبان کی جانب سے حملے پر جوابی کارروائی میں تمام حملہ آور مارے گئے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >