کیا واقعی برطانیہ نے خطرے کے باوجود افغان شہریوں کوحملے کی جگہ پر جمع ہونے کی ہدایت کی؟

کچھ روز قبل افغان دارالحکومت کابل کے حامد کرزئی انٹرنیشنل ائیر پورٹ کے ایبے گیٹ پر ہونے والے دھماکے سے متعلق نئے انکشافات منظر عام پر آئے ہیں۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق کابل ائیر پورٹ پر ہونے والے دھماکوں سے پہلے برطانیہ اور امریکا کو حملوں کے خطرات کا علم تھا، یعنی دونوں ممالک باخبر تھے کہ ایئرپورٹ پر حملہ ہونے والا ہے۔

اس کے باوجود برطانوی سفارتخانے نے انخلا کے خواہش مند افغان شہریوں کو ایئرپورٹ کے ایبے گیٹ پر جمع ہونے کی ہدایت کی۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی ایک رپورٹ کے مطابق، یہ انکشاف برطانوی حکام کی سامنے آنے والی ای میلز سے ہوا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق برطانوی حکومت کی جانب سے ان ای میلز کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل کابل کے ائیرپورٹ کے قریب ایبے گیٹ پر ہونے والے دھماکے کے نتیجے میں 13 امریکی فوجیوں سمیت تقریباً 200افراد ہلاک جبکہ متعدد افراد زخمی بھی ہوئے تھے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>