افغان طالبان کا وادی پنجشیر پر کنٹرول کا دعویٰ،امر اللہ کے فرار کی اطلاعات

افغان طالبان کا وادی پنجشیر پر کنٹرول کا دعویٰ،امر اللہ کے فرار کی اطلاعات

افغان طالبان نے ملک کی ناقابل تسخیر وادی پنجشیر پر بھی کنٹرول حاصل کرلیا ہے، سابق افغان نائب صدر امر اللہ صالح ملک سے فرار ہوگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق طالبان نے دعویٰ کیا ہے کہ وادی پنجشیر کے تمام 34 اضلاع پر انہوں نے کنٹرول حاصل کر لیا ہے، وادی پنجشیر میں طالبان کو شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا تھا، یہ وہ آخری علاقہ ہے جس پر ابھی تک طالبان کو کنٹرول حاصل نہیں ہوا تھا، سابق مفرور صدر اشرف غنی کی حکومت کے چند سینیئر وزراء کے بھی اسی علاقے میں پناہ لینے کی اطلاعات ہیں۔

طالبان کی جانب سے سابق افغان نائب صدر امر اللہ صالح کے تاجکستان فرار ہونے کا بھی دعویٰ کیا گیا ہے۔ افغان میڈیا طلوع نیوز کے مطابق امر اللہ صالح نے اطلاعات کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں کہیں نہیں بھاگا اپنے لوگوں کے درمیان ہوں۔

گزشتہ روز ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا تھا کہ مقامی مسلح گروپ کے ساتھ مذاکرات ناکام ہونے کے بعد ہم نے ان کے خلاف آپریشن شروع کردیا ہے۔

بعد ازاں ترجمان طالبان کی جانب سے دعویٰ کیا گیا کہ طالبان کے جنگجو پنجشیر میں داخل ہوگئے ہیں اور مختلف علاقوں کا کنٹرول حاصل کرلیا ہے۔

دوسری جانب قومی مزاحمتی فرنٹ افغانستان (این آر ایف اے) کے خارجہ تعلقات کے سربراہ علی میثم نذارے نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں طالبان کے دعووں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ میڈیا کو طالبان کے پروپیگنڈے پر یقین نہیں کرنا چاہیے، پنجشیر پر قبضے کا طالبان کا دعویٰ درست نہیں ، این آر ایف نے بہادری سے ان کے تمام حملوں کو ناکام بنایا ہے۔

واضح رہے کہ افغان طالبان نے 15 اگست کو ملک کے بیشتر حصوں پر قبضہ کرنے کے بعد کابل پر قبضہ کر لیا تھا، طالبان کو دارالحکومت کے شمال میں پنجشیر وادی میں شدید مزاحمت کا سامنا تھا، طالبان کے آخری دور حکومت میں بھی بلخ، بدخشاں اور پنجشیر میں طالبان کا نظام حکومت نافذ نہیں تھا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>