پاکستانی پرچم میں جسدِ خاکی لپیٹنے پر علی گیلانی کی فیملی پر فرد جرم عائد

بھارت نے حریت رہنما علی گیلانی کی میت پاکستانی پرچم میں لپیٹنے پر اہل خانہ کے خلاف دہشت گردی کی دفعات کے تحت فرد جرم عائد کردی ہے۔

کچھ روز قبل مودی سرکار نے کشمیری حریت رہنما سید علی گیلانی کے اہل خانہ کے خلاف ان کی میت پاکستانی پرچم میں لپیٹنے اور بھارت کے خلاف نعرے لگانے پر مقبوضہ کشمیر کے ضلع بڈگام میں مقدمہ درج کیا تھا ۔ اب سید علی گیلانی کے اہل خانہ پر فرد جرم بھی عائد کردی گئی ہے جس کی بھارتی پولیس نے تصدیق کی ہے۔

سید علی گیلانی کے اہل خانہ پر ریاست مخالف نعرے بازی اور ان کی میت کو پاکستانی پرچم میں لپیٹنے پر دہشتگردی کی دفعات کے تحت فرد جرم عائد کی گئی

موودی سرکار کے اس اقدام پر پاکستان کی طرف سے شدید ردعمل دیکھنے کو ملا، وفاقی وزراء نے اسے شرمناک عمل قرار دیا جبکہ وزیراعظم عمران خان نے سید علی گیلانی فیملی کے خلاف مقدمہ درج کرنے پر وزیراعظم عمران خان نے سخت ردعمل کا اظہار کیا تھا

اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا تھا کہ سید علی گیلانی کی میت ان کے ورثا سے چھینے جانا غلط عمل ہے اور ان کے اہلخانہ ہی کے خلاف مقدمات کا اندارج بھارتی فاشزم کی شرمناک مثال ہے۔

وزیراعظم عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ 92 سالہ کشمیری لیڈر سید علی گیلانی قابل احترام اور اصول پسند تھے۔ انہوں نے بھارت کے اس عمل پر کہا کہ بھارت کی موجود بی جے پی حکومت نازی اور آر ایس ایس کا مجموعہ ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>