کرونا وائرس کی تشخیصی کٹس جاپان نے پاکستان کے حوالے کر دیں

کٹس جمعہ کی صبح کراچی پہنچی، ایک ہزار مشتبہ نمونوں کی اسکریننگ ہو سکے گی

تفصیلات کے مطابق قومی قومی ادارہ برائے صحت اسلام آباد کے لیب ڈویژن کے انچارج ڈاکٹر محمد سلیمان نے بتایا کہ جاپانی حکومت کی جانب سے بھجوائی گئیں کٹس جمعے کی صبح موصول ہو گئی جس کے بعد کم از کم ایک ہزار مشتبہ نمونوں کی تشخیص کے قابل ہوجائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ جاپان کے علاوہ امریکا کے ادارے سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول کی جانب سے بھی کیمیکلز حکومت پاکستان کو مہیا کیے جارہے ہیں جو کہ چند دنوں میں پاکستان پہنچ جائیںگی ۔

ڈاکٹر محمد سلیمان کے مطابق اِس وقت قومی ادارہ برائے صحت تقریباً تمام وائرسز کی تشخیص کی صلاحیت رکھتا ہے لیکن چونکہ کورونا وائرس ایک نیا جرثومہ ہے، اس لیے اس کی تشخیص میں استعمال ہونے والے پرائمرز یا کیمیکلز پاکستان میں تیار نہیں ہورہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جمعے کے روز قومی ادارہ برائے صحت کو پرائمرز ملنے کے بعد پورے ملک سے مشتبہ نمونے اُن کے پاس پہنچنا شروع ہو جائیں گے۔

وفاقی وزارت صحت کے حکام نے بھی بتایا ہے کہ چین، جاپان، امریکا اور جرمنی بھی پاکستان کو کورونا وائرس کے خطرے سے نمٹنے کے لیے آلات اور رہنمائی فراہم کرنے پر تیار ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>