سعودی عرب : پاکستانی ڈاکٹر نے انسانیت کی اعلیٰ مثال قائم کردی

پاکستانی ڈاکٹر نذیر احمد خان شکل و صورت، رہن سہن، بول چال غرض کے ہر لحاظ سے سعودی معاشرے کا حصہ بن گئے ہیں۔

سعودی میڈیا کے مطابق پاکستانی ڈاکٹر نذیر احمد خان نے اپنی تمام تر صلاحیتیں سعودی عوام کے لیے وقف کر دی ہیں ان کا وڈیو کلپ سرکاری رابطہ مرکز نے سوشل میڈیا پر شیئر کیا جس میں ڈاکٹر نذیر کو گفتگو کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔

نذیر احمد خان اپنی ویڈیو میں بتا رہے ہیں کہ وہ ریاض کے تین بڑے کلینکس میں سے ایک کے ڈائریکٹر رہے ہیں، ریاض میں الفوطہ ، مسجد العید اور المرقب نام کے 3 پولی کلینک ہوتے تھے۔ ان میں سے ایک وہ ڈائریکٹر تھے۔

نذیر احمد خان نے سعودی عرب کے حوالے سے یادوں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک انصاف، رحم دلی اور خیر پسندی سے آباد ہے اور میں اپنی آخری سانس تک اس کی خدمت کرتا رہوں گا۔

نذیر احمد خان نے کہا کہ ایک زمانے سے میرے کلینک میں جوان بوڑھے اور بچے سب ہی اپنا طبی معائنہ کرانے آتے ہیں، ان سے معائنہ فیس تیس ریال وصول کی جاتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یہ فیس انہوں نے سابق سعودی فرمانروا شاہ فیصل کے زمانے میں مقرر کی تھی تب سے اب تک اسی پر قائم ہیں اور آج بھی اپنی فیس 30 ریال سے زیادہ وصول نہیں کرتے۔

  • Yahi kaam Pakistan mein kerte hue maut perti hain in doctors ko, bahir ja ker ghulami bhi kerte hain aur achi tarah treatment, Pakistan mein reh ker mareezo ko maan behan ki galiyan bhi dete hain aur 2000 to 5000 fees bhi bator lete hain.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >