پولیو وائرس کے خلاف حکومت کو اہم کامیابی مل گئی

ملک کے مختلف علاقوں کے سیوریج کے پانی سے لیے گئے نمونوں سے پولیو وائرس کے ثبوت نہیں ملے ہیں۔

خبررساں ادارے نے اپنی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ ملک کے چاروں صوبوں میں مختلف مقامات سے سیوریج کے نمونے لیے گئے جس میں پولیو وائرس کی موجودگی کے ثبوت نہیں ملے۔

حال ہی میں کی گئی ایک تحقیق میں کراچی، لاہور، اسلام آباد، ملتان اور فیصل آباد سمیت 60 سے زائد علاقوں کے سیوریج کے پانی سے نمونے حاصل کیے گۓ، کراچی میں نمونے مچھر کالونی اور خمیسو گوٹھ سے لیے گئے۔

تحقیق کے نتائج کے مطابق کراچی، سکھر، راولپنڈی، اسلام آباد، ملتان ڈیرہ غازی خان میں پولیو وائرس کی موجودگی کے ثبوت نہیں ملے۔

اسی طرح لاہور، فیصل آباد، کوئٹہ ،لورالئی، قلع عبداللہ، پشاور، چارسدہ، مردان، نوشہرہ اور بنوں کے علاقےبھی پولیو وائرس سے کلیئر قرار دیئے گئے ہیں۔

واضح ہو کہ پولیو کا وائرس کسی بھی ایسی ادھ پکی یا کچی غذا،پانی یا دیگر مشروبات کے استعمال سے پھیلتا ہے جس میں پولیو وائرس بذریعہ فضلہ شامل ہوگیا ہو، اسی لیے دنیا بھر میں پولیو وائرس کے خلاف ویکسین مہم کی کامیابی کو جانچنے کیلئے اس علاقے کے سیوریج کے نمونوں میں وائرس کی موجودگی کے ٹیسٹ کیے جاتے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >