بنوں میں کرونا وائرس کو یہودی سازش قرار دے کر عوام کو گمراہ کرنے والے گرفتار

خیبرپختونخوا میں کرونا وائرس کو غیر ملکی پروپیگنڈا قرار دینے، احتیاطی تدابیر کے خلاف اکسانے پر مولوی اور اسٹوڈیو کا مالک پولیس کے ہتھے چڑھ گئے۔


تفصیلات کے مطابق گزشتہ دو دن سے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں دو مولویوں نے پشتو میں نظم گاتے ہوئے کرونا وائرس کو غیرملکی اور یہودی پراپیگنڈہ قرار دے کر لوگوں کو حکومت کی جانب سے بتائی گئی احتیاطی تدابیر نہ اپنانے اور احتیاط نہ کرنے پر اکسانے پر مقامی پولیس نے گرفتار کر کے حوالات میں بند کر دیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں مولویوں نے لوگوں کو احتیاطی تدابیر اختیار نہ کرنے کا کہا اور پشتو میں گائی گئی اپنی نظم میں یہ بھی کہا کہ کرونا وائرس کی افواہ دجالی فتنہ ہے جبکہ خانہ کعبہ کو بھی سازش اور دھوکے کے ذریعے بند کیا گیا ہے۔ نظم کے ذریعے انہوں نے لوگوں پر زور دیا کہ وہ اپنی روزمرہ کے مطابق معمول کی زندگی گزاریں اور کسی قسم کے دھوکے میں نہ آئیں۔

دوسری جانب سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو پر ضلعی انتظامیہ نے ایکشن لیتے ہوئے تین افراد کو گرفتار کر کے پولیس اسٹیشن میں مقدمہ درج کرلیا۔ پولیس کی جانب سے گرفتار کیے گئے افراد میں سٹوڈیو کا مالک سجاد اور نظم گانے والے مولوی عبدالجلیل اور مولوی بلال شامل ہیں۔ جن کا تعلق خیبر پختونخوا کے ضلع بنوں سے بتایا جا رہا ہے۔

  • ان خبیثوں کو کرونا وائرس سے ایکسپوز کر کے کسی ایسی جگہ بند کر دیا جائے جہاں سے یہ بھاگ نہ سکیں اور ان کو علاج کی سہولت اس وقت مہیا کی جائے جب ان کو سانس لینے میں دقت محسوس ہو.


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >