ریاست باجماعت نماز پابندی لگا سکتی ہے،صدر عارف علوی کی درخواست پر جامعۃ الازہر کا فتویٰ

مصر کی علماء سپریم کونسل جامعۃ الازہر نے کورونا وائرس کی عالمی وبا کے موقع پر باجماعت نماز اور نماز جمعہ کے حوالے سے فتوٰی جاری کردیا ہے۔
صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نےٹویٹر پر مصر کے امام الازہر اور علماء سپریم کونسل کا کورونا وائرس کے بحران میں باجماعت نماز کے حوالے سے رہنمائی دینے پر شکریہ ادا کیا اور پاکستانی علماء کیلئے فتوٰی کی تفصیلات بھی شیئر کیں۔
جامعۃ الازہر کی جانب سے جاری کردہ فتوٰی میں کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس تیزی سے پھیلنے والا مرض ہے اسلامی تعلیمات ایک زندگی کو بچانے اور خطرات ونقصانات سے محفوظ رکھنے کا درس دیتی ہیں لہذا ہر مسلم ریاست میں حکومت باجماعت نماز اور جمعہ کی نماز پر پابندی لگانے کا اختیار رکھتی ہے، اسی لیے انسانی جان کے تحفظ کیلئے باجماعت نماز اور جمعہ کی نماز پر پابندی لگائی جاسکتی ہے اور اس پابندی پر عمل کیا جانا بھی ضروری ہے، جبکہ معمر افراد گھر میں رہ کر نماز ادا کریں۔


فتوٰی کے مطابق موذن حضرات "صلوۃ فی بیوتکم” (نماز گھروں میں ادا کریں) کے ساتھ ترمیم شدہ اذان دیں، گھروں میں باجماعت نماز کا انعقاد کیا جاسکتا ہے۔
یاد رہے کہ صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے مصر کے سفیر کے توسط سے شیخ الازہر سے کورونا وائرس کے دوران باجماعت نماز کے حوالے سے رہنمائی کی درخواست کی تھی جس کے بعد جامعۃ الازہر کی سپریم کونسل نے فتوٰی جاری کیا ہے۔
واضح ہو کہ پاکستان میں بھی تمام مکاتب فکر نے عوام کو کورونا سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدابیر اپنانے کی تجویز دی ہے ، رویت ہلال کمیٹی کے چیئرمین مفتی منیب الرحمان نے مساجد میں باجماعت نماز جاری رکھنے کی ہدایات دی ہیں اور کہا کہ نمازی وضو گھروں سے کر کے آئیں، صرف بیمار حضرات گھروں میں نماز ادا کریں۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More