سپین میں پاکستانی ٹیکسی ڈرائیورز نے مثال قائم کردی

سپین کورونا وائرس سے متاثر ہونے والا چوتھا ملک ہے جہاں اب تک 4 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں، ملک بھر میں لاک ڈاؤن کیا جا چکا ہے ایسے میں پاکستانی ٹیکسی ڈرائیورز نے کورونا کا علاج کرنے والے ڈاکٹرز اور دیگر طبی عملے کو مفت ہسپتال اور گھر تک پہنچانے کی سہولت فراہم کرکے انسانیت کی نئی مثال قائم کردی ہے۔

بارسلونا میں ٹیکسی چلانے والے پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور محمد شہباز کھٹانہ کا کہنا تھا کہ ہم تمام ڈاکٹرز جوہسپتالوں میں کورونا سےمتاثرہ مریضوں کے علاج کے فرائض سرانجام دے رہے ہیں انہیں گھروں سے ہسپتال تک اور ہسپتال سے گھروں تک پہنچانے کی سہولت مفت فراہم کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا یہ قدم ہم چند ساتھیوں نے مل کر اٹھایا تھا پھر چند دنوں بعد ہمارے ساتھ مزید ٹیکسی ڈرائیور شامل ہوئے اور ہماری تعداد 50 ہوگئی پر اب 150 سے زائد ٹیکسی ڈرائیورز اس فری سروس کا حصہ ہیں جو ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو مفت ٹرانسپورٹ کی سہولت فراہم کررہے ہیں۔

یہ ٹیکسی ڈرائیورز تمام احتیاطی تدابیر اپناتے ہیں تاکہ اس وائرس سے محفوظ رہ سکیں، ان تمام ڈرائیورز کے رابطہ نمبر ہسپتال انتظامیہ کے پاس موجود ہوتے ہیں جس کی بدولت وہ بوقت ضرورت فون کرکے ٹیکسی ڈرائیور کو بلا سکتے ہیں۔

بارسلونا کے ایک ہسپتال وائیےدے ابرون میں نرس کے فرائض سرانجام دینے والی کارن ریا ایک ٹیکسی میں سفر کرتے ہوئے کہتی ہیں کہ میں ان تمام ٹیکسی ڈرائیورز کا شکریہ ادا کرتی ہوں ، یہ ایک نیک کام اور یکجہتی کا اظہار ہے جو پاکستانی ٹیکسی ڈرائیورز کی جانب سے کیا جارہا ہے،

ایک اور ڈاکٹر الورو مارتیز جو کہ دل مار ہسپتال میں فرائض سرانجام دیتے ہیں ان کا کہنا تھا کہ میں تمام پاکستانی ٹیکسی ڈرائیورز اور سب جو رضاکارنہ طور پر خدمات سرانجام دے رہے ہیں سب کا شکریہ ادا کرتا ہوں ہم سب مل کر اس بحران سے نکل سکتے ہیں۔
ایک اور ٹیکسی ڈرائیور سید شیراز کا کہنا تھا کہ مجھ سمیت سینکڑوں پاکستانی اس وقت بارسلونا میں سماجی خدمت میں مصروف ہیں، جب بھی کوئی مشکل صورتحال سامنے آتی ہے، کوئی سانحہ ہوتا ہے ہم ہمیشہ میزبان ملک کو اپنی خدمات پیش کرنے کیلئے تیار رہتے ہیں، 2017 میں دہشت گردوں کے حملے میں پاکستانیوں نے دن رات مقامی لوگوں کی مدد کی اور انہیں مفت ٹرانسپورٹ کی سہولیات فراہم کیں
تمام پاکستانی مقامی آبادی اور پولیس کے ساتھ مل کر روزانہ شام 8 بجے تالیاں بجا کر ڈاکٹرز اور نرسوں کی حوصلہ افزائی بھی کرتے ہیں، ٹیکسی ڈرائیورز کا ماننا ہے کہ ان کی اس خدمت سے نہ صرف لوگوں کا بھلا ہورہا ہے بلکہ پاکستانی برادری کے وقار میں اضافہ بھی ہورہا ہے۔


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >