کرونا کی وباء کے پیش نظر حکومت کا باجماعت نماز اور جمعہ کے اجتماعات کو محدود کرنے کا اعلان

تفصیلات کے مطابق کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے خدشے کے پیش نظر حکومت کی جانب سے نماز جمعہ اور باجماعت نماز کے اجتماعات کو محدود کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جس میں نماز جمعہ کے اجتماعات میں انتظامیہ اور محدود تعداد میں نمازی مسجد میں نماز کی ادائیگی کے لیے آئیں گے۔

وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری کا اسلام آباد میں کورونا وائرس کی روک تھام کے سلسلے میں حکومتی اقدامات سے متعلق پریس کانفرنس میں بتاتے ہوئے کہنا تھا کہ علماء کرام کے ساتھ باہمی مشاورت سے آج مساجد اور نماز جمعہ سے متعلق چند اہم فیصلے کیے گئے ہیں جن میں نماز جمعہ کے اجتماعات اور نماز با جماعت ادا کرنے والوں کی تعداد محدود رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

وزیر مذہبی امور کا کہنا تھا کہ وبا کے پیش نظر علما کرام سے درخواست کی ہے کہ  لوگوں کو گھروں میں رہ کر عبادات کا اہتمام کرنے کی ترغیب دیں جبکہ ہم مساجد کو بند نہیں ہونے دیں گے، وہاں ذکر اذکار ، تلاوت اور اذان و نماز کے معمولات پہلے کی طرز پر جاری رہیں گے۔ تاہم براہ کرم نمازیوں کی تعداد کو محدود کر دیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ کرونا وائرس کی وباء پھیلنے کے بعد علمائے کرام نے بھرپور تعاون کیا ہے اور مدارس میں تدریس، امتحانات اور  حکومتی احکامات کی پیروی کرتے ہوئے تمام سرگرمیاں معطل کردی ہیں۔ تاہم علماء کرام نے کورونا سے متعلق مزید اقدامات کا اختیار صدر مملکت کو دیا ہے۔


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>