پنجاب میں کرونا سے بچاو کیلئے اقدامات،قطار مینجمنٹ سسٹم پر عملدرآمد جاری

پنجاب اس وقت کرونا وائرس متاثر ہونے والا سب سے بڑا صوبہ بن گیا ہے جہاں متاثرین کی تعداد سندھ سے تجاوز کر گئی ہے. پنجاب میں اس وقت کیسز کی تعداد چار سو ستانوے ہوچکی ہے. جبکہ ملک میں گیارہ میں سے تین ہلاکتیں پنجاب میں ہوئی ہیں.

پنجاب میں تیزی سے بڑھتے کیسز کی روک تھام کیلئے عوام وزیراعلی عثمان بزدار کی جانب سے متعارف کرائے گئے قطار مینجمنٹ سسٹم پر سختی سے عمل کررے ہیں. پنجاب کے اسٹورز , فارمیسز اور دکانوں کے باہر اور اندر قطار بنا دیئے گئے ہیں جہاں عوام سماجی فاصلہ رکھنے کیلئے ان قطاروں میں کھڑے ہو کر اشیائے ضروریہ خرید رہے ہیں. جس کا مقصد کرونا سے بچاو کیلئے انسانی فاصلہ یقینی بنانا ہے.

حکومت پنجاب کے اس اقدام سے سماجی فاصلے کو تقویت مل رہی ہے.اسسٹنٹ کمشنر بھی سماجی فاصلہ برقرار رکھنے کے اس عمل میں خدمات انجام دے رہے ہیں اور اپنی اپنی تحصیل میں چونے اور رنگ سے دائرے بنا کر قطار سسٹم بنا رہے ہیں.

وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر فارمیسیز اور سٹورز پر قطار مینیجمینٹ سسٹم پر عمل درآمد جاری اس عمل سے سماجی فاصلہ رکھنے میں مدد ملے گی یہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ایک اہم اقدام ہے۔

Posted by PTI Official Videos on Saturday, March 28, 2020

محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے پہلے ہی اسپتالوں میں قطارمینجمنٹ سسٹم متعارف کروادیا گیا ہے.ضلعی انتظامیہ کی جانب سے بھی کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے اسٹور، بینکس اور رش والی جگہوں پر سماجی فاصلے کے لیے قطار مینجمنٹ سٹم لگادیا گیا ہے.

عوام سے بھی گزارش ہے کہ وہ قطار کیلئے لگائے نشانات پر عمل کرتے ہوئے اپنی حفاظت یقینی بنائیں کیونکہ احتیاط علاج سے بہتر ہے.اور کرونا سے بچاو کیلئے سماجی فاصلہ سب سے زیادہ ضروری ہے.کیونکہ یہ ایک انسان سے دوسرے انسان میں منتقل ہونے والی بیماری ہے.ایک شخص کے متاثر ہونے سے اس کے ساتھ ہاتھ ملانے اور ساتھ رہنے والے بھی یہ وائرس منتقل ہوسکتا ہے.

پنجاب میں اس وقت لاک ڈاون ہے اور دفعہ ایک سو چوالیس نافذ ہے. جس کی خلاف ورزی پرپولیس پر وارننگ دی جارہی یے. جبکہ پولیس ترجمان کے مطابق تیرہ سو سے زائد افراد سے پاسداری کے حلف نامے لئے گئے ہیں..گھروں سے باہر نکلنے والوں کیخلاف مقدمات بھی درج کئے گئے ہیں.پولیس نے نے خبردار کردیا کہ شہری بلا ضرورت گھروں سے نکلنے والوں کیخلاف کارروائی ہوگی۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More