خواتین کی نسبت کرونا وائرس سے 50 فیصد زیادہ مرد کیوں ہلاک ہورہے ہیں، جانئیے

تفصیلات کے مطابق کرونا وائرس کے باعث پوری دنیا میں ہونے والی ہلاکتوں کے اعداد و شمار کے مطابق خواتین کی نسبت کرونا وائرس 50 فیصد زیادہ مردوں کے لیے خطرناک ہے ۔ تاہم طبی ماہرین کا اپنی ریسرچ میں کہنا ہے کہ تمباکو نوشی، شراب نوشی اور عموماً صحت کا خراب رہنا اس کی وجہ ہو سکتی ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق عورتوں کے ماں بننے کے باعث قوت مدافعت زیادہ ہوتی ہے جس کے باعث عورتوں کی شرح اموات مردوں سے کہیں کم ہے۔ جبکہ مردوں میں تماکو نوشی اور شراب نوشی کی عادت زیادہ ہلاکتوں کی وجہ قرار دی جارہی ہے۔

کرونا وائرس سے یورپ کا سب سے متاثرہ ملک اٹلی ہے جہاں چین کے سب سے زیادہ متاثرہ شہر ووہان سے کہیں زیادہ ہلاکتیں رپورٹ کی جا رہی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق اٹلی میں ایسے افراد جن میں کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی ان میں 60 فیصد مرد جبکہ اٹلی میں کرونا وائرس سے جان کی بازی ہارنے والے افراد میں 70 فیصد مرد شامل ہیں۔

اسی طرح اٹلی کے بعد جنوبی افریقہ میں بھی خواتین کی نسبت مردوں میں زیادہ شرح کے حساب سے کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جبکہ جان کی بازی ہارنے والے افراد میں 54 فیصد مرد ہیں۔

تاہم طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ پوری دنیا سے مردوں کی زیادہ ہلاکتوں کا اگر یہ ڈیٹا اکٹھا کر لیا جائے تو اس بات کا پتہ چلایا جا سکتا ہے کہ اس جان لیوا وائرس سے کسے اور کیسے بچایا جا سکتا ہے۔

پاکستان میں بھی کرونا وائرس کے باعث اب تک سامنے آنے والی ہلاکتوں اور تصدیق شدہ متاثرہ مریضوں کی تعداد میں عورتوں کے مقابلے میں مردوں کی شرح زیادہ ہے۔ جب کہ مشتبہ مریضوں میں بھی عورتوں کے مقابلے میں مردوں کی تعداد زیادہ ہے۔

یاد رہے کہ مہلک وائرسز سے عورتوں کے مقابلے میں مردوں کی شرح میں ہلاکتوں کی تعداد کا زیادہ ہونا پہلی دفعہ نہیں دیکھا گیا اس سے قبل بھی سارس اور مرس وائرس کی وبا پھوٹنے کے بعد ہانگ کانگ ، جنوبی کوریا اور سعودی عرب میں خواتین کی نسبت زیادہ مرد جان کی بازی ہار گئے تھے۔

طبی ماہرین کی تحقیق کے مطابق مرد خواتین کی نسبت شوگر اور ہائپر ٹینشن کے زیادہ شکار ہوتے ہیں اور یہ وہی امراض ہیں جن کی موجودگی میں کرونا وائرس زیادہ بگڑتا ہے۔ جبکہ دوسری جانب عورتوں میں بچے پیدا کرنے کی صلاحیت کی وجہ سے مردوں کے مقابلے میں مضبوط قوت مدافعت ہوتی ہے جسکی وجہ سے وہ مہلک وائرسز سے محفوظ رہتی ہیں۔

    (21 posts)

    Aap nay agar kisee mard nsay apni saath ziyadatee karwaee hay tu mardoon ki shahwat ko galee denee ki zaroorat nahee, apnee gandee tokree ganday mardoon sayb har haftay na bharwaya karoo , Aunty!!!

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More