پاکستان میں پایا جانے والا کورونا وائرس چین سے مختلف ہے،تحقیق

پاکستان کے معروف سائنسدان ڈاکٹر عطا الرحمان نے دعوی کیا ہے کہ پاکستان میں پایا جانے والا کورونا وائرس چین اور دیگر ملکوں میں پائے جانے والے کورونا وائرس سے مختلف ہے۔

ڈاکٹر عطاالرحمان کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ سینٹرفار جینومکس ریسرچ کراچی میں ایک تحقیق کے دوران اہم پیش رفت سامنے آئی ہے،تحقیق کے مطابق پاکستان میں پایا جانے والا کورونا وائرس چین اور دیگر ممالک کے کورونا وائرس سے مختلف ہے۔

ڈاکٹر عطا الرحمان کے مطابق کراچی یونیورسٹی کے انٹرنیشنل سینٹر فار کیمیکل اینڈ بیالوجیکل سینٹر کے ڈیپارٹمنٹ سینٹرفار جینومکس ریسرچ میں تحقیق کی گئی،ریسرچ میں ہونے والی پیش رفت سے آنے والے دنوں میں پاکستان میں وبا پر قابو پانے میں مدد مل سکتی ہے۔

دوسری جانب یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے وائس چانسلرڈاکٹر جاوید اکرام کا کہنا ہے کہ کورونا کی پاکستان میں موجود قسم  دوسرے ممالک کےکورونا وائرس سے مختلف ہے، لیکن ابھی یہ کہنا قبل از وقت ہوگا کہ یہ قسم کم یا زیادہ خطرناک ہے، ابھی اس پر مزید تحقیقات جاری ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں پایا جانے والا کورونا وائرس کورونا کی فیملی کے دو وائرس سے مل کر بنا ہےجس کے نتیجے میں پانچ مختلف قسم کے آئسوفارمز بن گئے ہیں اور یہ مزید تقسیم ہوتے رہتے ہیں، ان کے اثرات پر تحقیق جاری ہے۔
بظاہر تو یہ ایک معمولی فرق ہے لیکن جب اس کے خلاف ویکسین تیار کی جائے گی تو اس سے پاکستان میں پائے جانے والے کورونا وائرس پرزیادہ بہتر انداز میں اثر ات مرتب ہوں گے، مستقبل میں اس وائرس سے چھٹکارا پانے کیلئے مزید تحقیق کی ضرورت ہے کیونکہ یہ پھیلنے والا وائرس ہے ۔

    (2 posts)

    Bhai lock down shuroo to ho jay pehlay. Yahan koi ghar main betha he nahi. Sab mohallay main pehlay janazy ke intezar main hain ta ke khof tari hojay uske baad lock down start hoga

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More