ایک وینٹی لیٹرر سےمتعدد افراد فیض یاب، پاکستانی ڈاکٹر کا امریکہ میں کارنامہ

پاکستانی ڈاکٹر نے امریکہ میں کارنامہ سرانجام دیا ہے اور ایک وینٹی لیٹر کو ایک سے زیادہ مریضوں کیلئے استعمال کرنے کا طریقہ ڈھونڈ نکالا ہے۔

ڈاکٹر سعود انور نےاپنے ساتھی ڈاکٹر کے ساتھ مل کر ایسی ڈیوائس تیاری کی جس کی مدد سے ایک وینٹی لیٹر کو ایک سے زیادہ مریضوں کیلئے استعمال کیا جاسکتا ہے

دنیا بھر میں کورونا وائرس سےسات لاکھ افراد متاثر ہوچکے ہیں جبکہ ہلاکتوں کی تعداد35 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے، متاثرہ افراد میں سے 28 ہزار افراد کی حالت تشویش ناک ہے، کورونا وائرس کا شکار افراد  کا حالت بگڑنے پر واحد علاج وینٹی لیٹرہے جس کی مدد سے مریض کی جان بچائی جاسکتی ہے۔

دنیا کے تمام ممالک اس وقت وینٹی لیٹرز کی قلت کا شکار ہیں جس کی وجہ سے اس کے متبادل کی تیاری پر غور اور تحقیق کی جارہی ہے ایسے میں امریکہ میں مقیم دو پاکستانی ڈاکٹروں نے ایک وینٹی لیٹر کو ایک سے زیادہ مریضوں کیلئےقابل استعمال بنانے کا کارنامہ سرانجام دیا ہے۔

ڈاکٹر سعود انور نے ویڈیو پیغام میں کہا کہ ہم نے جو ڈیوائس بنائی ہے اس کی مدد سے ایک وینٹی لیٹر ایک نہیں دو نہیں بلکہ 7 مریضوں کو سانس دینے کا کام کررہا ہے، ہم اس سے زیادہ مریضوں کو بھی اسی وینٹی لیٹر کی مدد سے مصنوعی سانس دے سکتے ہیں۔
اس ڈیوائس کی مدد سے وینٹی لیٹرز کا مہنگااور قلیل علاج سستا اور عام ہوجائے گا۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More