ہندو کے انتقال پر کرونا وائرس کے خوف سے رشتہ داروں کا کندھا دینے سے انکار ،مسلمانوں نے میت کو کندھا دیا

ہندو کے انتقال پر کرونا وائرس کے خوف سے رشتہ داروں کا کندھا دینے سے انکار ،مسلمانوں نے میت کو کندھا دیا

بھارتی اترپردیش میں بلند شہر کے ایک شخص روی شنکر کی گذشتہ دنوں موت واقع ہو گئی۔ جس پر رشتے داروں نے میت کو کرونا وائرس کے خوف کی وجہ سے کندھا دینے سے انکار کردیا۔ رشتہ داروں کے انکار پر مسلمانوں نے اخلاقی ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے میت کو کندھا دیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر مذکورہ واقعے کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے معروف مصنف زینب سکندر نے لکھا کہ ” اترپردیش میں بلند شہر کے ایک شخص روی شنکر کی گذشتہ دنوں موت ہو گئی۔ جس پر لوگ کورونا کے ڈر سے ان کے جنازے کو کندھا دینے کے لیے نہیں نکلے یہاں تک کہ انکے رشتے دار بھی ان کی مدد کو نہیں آئے۔ لیکن ان کے مسلمان پڑوسیوں نے ان کی ارتھی (میت) کو کندھا دیا اور ان کی لاش کے ساتھ  "رام نام ستیہ ہے” کا نعرہ بھی لگاتے رہے”

معروف مصنف زینب سکندر کی جانب سے شیر کی کی ویڈیو میں بھی واضح طور پر دیکھا جاسکتا ہے کہ مسلمان میت کو کندھوں پر اٹھائے میت کو آگ دینے والی جگہ لے جا رہے ہیں اور ساتھ ساتھ "رام نام ستیہ ہے” کا نعرہ بھی لگا رہے ہیں جو کہ ہندوستان میں ظلم کرنے والے ہندوؤں کے منہ پر زوردار طمانچہ ہے۔

مصنفہ کی جانب سے شیئر کی گئی ویڈیو پر دیکھنے والوں نے اپنے اپنے طریقے سے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ جہاں لوگوں کی جانب سے اس اقدام کو سراہا جارہا ہے تو وہیں ہندوؤں کی جانب سے اس ویڈیو کو صرف ایک ڈرامہ قرار دیا جا رہا ہے۔

"راج سندھو” نامی سوشل میڈیا صارف کا مسلمانوں کی جانب سے کیے گئے اقدام کو سراہتے ہوئے لکھنا تھا کہ” ہندو توا شرم آ تو رہی ہو گی”

ایک اور ” سٹیزن پولیٹیکل” نامی ٹویٹر صارف کا مصنفہ کی جانب سے شیئر کی گئی ویڈیو کے جواب میں لکھنا تھا کہ ” دیکھو نریندر مودی ، امیت شاہ اور آر ایس ایس کے غنڈوں یہ میرا انڈیا ہے وہ نہیں جس کا تم پلان کر رہے ہو”

تاہم جہاں اس ویڈیو کو خوب سراہتے ہوئے اس پر مثبت خیالات کا اظہار کیا جا رہا ہے وہی "باسو” نامی ہند ٹویٹر صارف نے اس کو ڈرامہ قرار دیتے ہوئے لکھا کہ ” اس ڈرامہ کو بند کیا جائے”

یاد رہے کہ بھارت میں 21 دن کا لاک ڈاؤن ہے جو بھارتیہ جنتا پارٹی کے گلے پڑ گیا۔ لاک ڈاون کے باعث لوگ بھوک کے باعث اپنے اپنے گھروں کو جانے پر مجبور ہیں اور ہزاروں کی تعداد میں لوگ مسافر بس سٹیشنوں پر جمع ہیں جبکہ ٹرانسپور ٹ اور دکانیں بند ہیں جس پر لوگوں کو کھانے کے لالے پڑے ہیں۔ جس پر بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے قوم سے معافی بھی مانگی ہے۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More