سیالکوٹ کے اہلخانہ کی بے حسی، کرونا سے جاں بحق نوجوان کی لاش چھوڑ کر فرار

سیالکوٹ کے اہلخانہ کی بے حسی، کرونا سے جاں بحق نوجوان کی لاش چھوڑ کر فرار

سیالکوٹ کی تحصیل ڈسکہ میں اہلخانہ نے بے حسی کی انتہاکردی، کرونا سے انتقال کرنے جانے والے نوجوان کے اہل خانہ میت اسپتال میں چھوڑ کر فرار ہوگئے۔ واقعہ گاؤں بکھڑے والی میں پیش آیا، جہاں نوجوان ارسلان میں کرونا کی علامات ظاہر ہوئیں۔

اہل خانہ کے مطابق وہ ارسلان کو اسپتال لے کر گئے تو ڈاکٹرز نے علاج سے انکار کردیا اور اہلخانہ ارسلان کو لے کر گھر آگئے۔ جس کے بعد مشتبہ نوجوان گھر میں ہی زندگی کی بازی ہار گیا۔

اہل خانہ کو جب ارسلان کے انتقال کی تصدیق ہوئی تو وہ لاش چھوڑ کر بھاگ گئے، علاقہ مکینوں کی اطلاع پر اسسٹنٹ کمشنر کی ہدایت پر مقامی فلاحی ادارے کے رضا کاروں نے نوجوان کی تدفین اور جنازے کے انتظامات کیے۔ جنازے میں دو پڑوسیوں ,امام مسجد اور چار رضاکاروں نے شرکت کی۔ احتیاطی تدابیر کے ساتھ نوجوان کی تدفین مقامی قبرستان میں کی۔

علاقہ مکینوں اور سرکاری ٹیم نے اہل خانہ سے رابطہ کرنے کی کوشش کی مگر تدفین تک کوئی رابطہ نہ ہوسکا۔

پاکستان میں کرونا متاثرین کی تعداد 98 ہزار سے زائد اور اموات کی تعداد 2002 سے زیادہ ہے۔پنجاب اس وقت پاکستان کا سب سے متاثرہ صوبہ ہے جہاں متاثرین کی تعداد 35 ہزار سے زائد ہے جبکہ وائرس کے باعث سب سے زیادہ اموات بھی پنجاب میں ہوئی ہیں

    Senator (1k + posts)

    کرونا سے انتقال کرنے والی باڈیز کو دفنانا حکومت کی ڈیوٹی ہے گھر والوں کو صرف قبر پر جانے دیاجاتا ہے حکومت اپنا کام نہیں کررہی

    1
    2

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More