حیدرآباد میں کرونا کی شکار ڈاکٹرارم بچے کو جنم دینے کے بعد جاں بحق

حیدرآباد میں کرونا کی شکار ڈاکٹرارم بچے کو جنم دینے کے بعد جاں بحق

سندھ کے دوسرے بڑے شہر حیدرآباد میں کرونا کے وار جاری ہیں۔ جہاں ڈاکٹرز اور طبی عملہ بھی اس وائرس سے محفوظ نہیں ہے، حیدرآباد میں کرونا کا شکار ایک اور ڈاکٹر زندگی کی بازی ہار گئی۔

حیدر آباد کے ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفس میں کووڈ19 کے فوکل پرسن کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر ارم ظہیر کووڈ-19 سے انتقال کرگئیں، جو ممکنہ طور پر سی سیکشن علامات کے بعد ظاہر ہوا۔

حیدرآباد کے لیاقت یونیورسٹی اسپتال کی کرونا وائرس کے باعث بچے کو جنم دینے کے بعد دم توڑ گئی ہیں۔ حیدرآباد میں کرونا وائرس سے اموات ستر ہوگئی ہیں۔

ڈاکٹر ارم ظہیرایل یو ایچ میڈیکل وارڈ تھری کی رجسٹرار تھیں اور زچگی کے باعث نجی اسپتال میں داخل ہونے سے قبل اسپتال میں اپنے فرائض انجام دے رہی تھیں۔ ڈاکٹرارم نے بیٹی کوجنم دینے کے بعد کرونا کی علامات محسوس کیں اور انہیں دوسرے اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زندگی کی بازی ہار گئیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >