چینی سائنسدان نے لوگوں کو قائل کرنے کے لئے خود کو کرونا کی تجرباتی ویکسین لگا لی

چینی سائنسدان نے لوگوں کو قائل کرنے کے لئے خود کو کرونا کی تجرباتی ویکسین لگا لی

علی بابا ہیلتھ کے زیر اہتمام ویبینار میں چائنیز سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پروینشن کے سربراہ گاوّفو نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں نے کرونا وائرس کی تجرباتی ویکسین خود کو لگا لی ہے اور یہ میں نے صرف اس لئے کیا ہے کہ میں لوگوں کو قائل کر سکوں کہ وہ خود کو کرونا کی تجرباتی ویکسین لگوائیں۔

گاوّفو کا ویبینار سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہنا تھا کہ گزشتہ ماہ کے اوائل میں چین کی ریاستی کمپنی نے اپنے ملازمین کو حکومت کی منظوری کے بغیر ہی کرونا وائرس کی ویکسین تجرباتی طور پر لگائی تھی، جس پر ماہرین نے اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا، اسی تناظر میں میں نے خود کو کرونا وائرس کی تجرباتی ویکسین لگا لی ہے، امید ہے کہ یہ کارگر ثابت ہوگی۔

چینی سائنسدان گاوّفو نے ویبینار میں خطاب سے یہ واضح نہیں کیا کہ انہوں نے خود کو کرونا کی کونسی تجرباتی ویکسین لگائی ہے اور انہوں نے یہ اقدام حکومت کی منظوری سے اٹھایا ہے یا اپنی مرضی سے، یہ بھی واضح نہیں کیا۔

خیال رہے کہ گاوّفو نے گزشتہ ماہ ایک تحقیقی مقالہ مشترکہ طور پر لکھا تھا جس میں انہوں نے سینوفارم کی جانب سے بنائی گئی ویکسین متعارف کروائی تھی، جس کے ذریعہ انہوں نے لیب میں ہی تیار کردہ وائرس کو ختم کر دیا تھا، جو کرونا وائرس کے خلاف سائنسی دنیا میں ایک اہم پیشرفت تھی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >