کورونا کیلئے بنائی گئی چینی ویکسین ٹرائلز کیلئے پاکستان بھیجی جائے گی، امریکی اخبار

کورونا کیلئے بنائی گئی چینی ویکسین ٹرائلز کیلئے پاکستان بھیجی جائے گی، امریکی اخبار

پاکستانی حکام کے مطابق چین جنوبی ایشیائی ملکوں میں ویکسین کے ٹرائل کے معاہدے کے تحت پاکستان کو کورونا وائرس کی ویکسین فراہم کرے گا۔

امریکی اخبار وال سٹریٹ جنرل کے مطابق ترقی پذیر ممالک میں چین کے قریب ترین اتحادیوں میں سے پاکستان ویکسین کی تقسیم کے شروع میں کافی مقدار میں ویکسین وصول کرے گا تاکہ اس کی 22 کروڑ آبادی میں سب سے زیادہ کمزور افراد کو ویکسین دی جائے گی۔

جن میں بزرگ مریض اور ان کا علاج معالجہ کرنے والے پیرامیڈیکل سٹاف کے لوگ شامل ہوں گے۔ حکام کے مطابق چین سے آنے والی ویکسین کی تعداد پاکستان کی کل آبادی کا پانچواں حصہ ہوگی۔

حکام کے مطابق پاکستان ایک دوسری چینی کمپنی سے اپنی ویکسین کو اپنے ملک میں ٹرائل کے طور پر جانچنے کے لیے بات چیت کر رہا ہے۔

چین میں ملکی سطح پر تو اس ویکسین کی جانچ کی گئی ہے مگر کورونا کے خلاف اس کو کارگر سمجھنے کے لیے اس ویکسین کو بیرون ملک جانچنا بہت ضروری ہے تاکہ اس کو عالمی سطح پر بھی کارآمد اور مفید تصور کیا جا سکے۔

اب چونکہ چین میں کورونا کے کیسز کم ہو چکے ہیں اور یہاں متاثرین کی اتنی بڑی تعداد موجود نہیں اس لیے ویکسین کو جانچنا بہت ضروری ہے۔

چین کی سرکاری فارما سیوٹیکل کمپنی سینوفرم نے پاکستان میں ٹرائلز کے لیے کراچی کی یونیورسٹی کے انٹرنیشنل سنٹر برائے کیمیکل اینڈ بائیولوجیکل سائنسز کے ساتھ ملکر کام شروع کر دیا ہے۔

امریکی اخبار کے مطابق اسی معاہدے میں شامل ایک پاکستانی عہدیدار کے مطابق یہ ویکسین ترجیحی بنیادوں پر پاکستان کو مل تو جائے گی مگر ابھی تک اس کی قیمت طے کرنا باقی ہے۔

امریکی اخبار کے مطابق پاکستان ویکسین کے فیز 1 ٹرائلز کرے گا اور پھر تیزی سے آخری مرحلے فیز 3 ٹرائل کی طرف جائے گا۔ آخری مرحلے میں ہزاروں رضاکاروں کی ضرورت ہوگی۔

چین نے 3 کورونا وائرس ویکسین تیار کی ہیں جو فیز 3 ٹرائلز میں ہیں ۔ چینی کمپنیاں متحدہ عرب امارات اور برازیل جیسے COVID-19 سے متاثر دیگر ممالک میں بھی حتمی ٹرائلز کر رہی ہیں۔

حال ہی میں کورونا وائرس ویکسین کی دوڑ تیز ہوگئی ہے جبکہ مغربی ممالک نے بھی اپنی ویکسینوں کو آخری آزمائشی مرحلے کی طرف دھکیل دیا ہے۔ کووویڈ19 کی ویکسین فی الحال آکسفورڈ یونیورسٹی اور امریکہ میں مقیم موڈرنا انکارپوریشن تیار کررہی ہے۔

اگرچہ کچھ دن پہلے ہی پاکستان نے کورونا وائرس کے لیے لگایا گیا لاک ڈاؤن اٹھا لیا تھا ، تاہم سرکاری عہدیداروں نے عوام پر زور دیا ہے کہ وہ وائرس کی دوسری لہر کو ناکام بنانے کے لئے کورونا ایس او پیز اور احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر (این سی او سی) نے گزشتہ ہفتے اعلان کیا تھا کہ کورونا وائرس لاک ڈاؤن میں مزید نرمی کی جائے گی ، جس میں ملک کے بڑے شہروں کراچی ، لاہور ، اسلام آباد ، پشاور ، اور کوئٹہ سمیت دیگر علاقوں اور قصبوں میں بازاروں ، شاپنگ مالز ، سینما گھروں ، ڈائننگ ریستورانوں ، سیلونز ، جمز اور دیگر کاروباروں کو دوبارہ کھولنے کا عمل شامل ہے۔

  • What is wrong in it? China gave the vaccine to Canada and many countries for trial too. what is bad in testing in Pakistan? The virus mutates and until vaccine is tested in different part of world the efficacy of the vaccine can’t be proved. Stage 3 trial mean, the vaccine has to be tested on a bigger population and it has passed safety trials of stage 1and 2. There is no harm in testing the vaccine in Pakistan.
    Pakistan should prepare the production facilities for vaccine and get ready for export once available.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >