بھارت میں روزانہ کرونا کے ڈھائی لاکھ سے زائد کیسز، ریڈلسٹ میں ڈالنے کا مطالبہ

بھارت میں کورونا کاقہر، برطانوی سائنسداں کا ریڈ لسٹ کا مطالبہ

بھارت میں کورونا کے تابڑ توڑ حملے جاری ہیں، مسلسل چوتھے روز بھی ریکارڈ دو لاکھ اکسٹھ ہزارپانچ سو افراد وائرس کا شکارہوگئے، پندرہ سوسے زائد اموات ہوچکی ہیں،بھارت میں مجموعی کیسز ایک کروڑ سینتا لیس لاکھ اٹھاسی ہزار سےزائد جبکہ اموات ایک لاکھ ستتر ہزار سے تجاوز کرچکی ہیں،اموات میں اضافے کے باعث قبرستانوں میں جگہ کم پڑنے لگی۔

کورونا وائرس کی بھارتی قسم کے برطانیہ میں سامنے آنے کے بعد بھارت کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کا مطالبہ شدت اختیار کرتا جارہاہے، معروف برطانوی سائنسدان ڈینی آلٹمن کا کہنا ہے کہ بھارت کو فوری طور پر ریڈ لسٹ میں ڈال دیا جانا چاہئے، یہ حیران کن ہے کہ بھارت سے آنے والوں پر ہوٹل میں رہنے کی شرط بھی نہیں۔

پروفیسر ڈینی آلٹمین نے وارننگ دی کہ برطانیہ میں کورونا کیسز تھمنے لگے ہیں، لیکن بھارتی قسم پھر سے کیسز میں اضافے کا باعث بن سکتی ہے،برطانوی کمیٹی برائے ویکسی نیشن اینڈ ایمیونائیزیشن کے پروفیسر ایڈم فن کا کہنا ہے کہ ویکسین سے پیدا ہونے والی مدافعت کے وائرس میں تبدیلیوں کی وجہ سے متاثر ہونے کے امکانات بہت کم ہیں۔

بھارتی ریاست مہاراشٹر اوردہلی کورونا سے سب سےزیادہ متاثر ہوئے، دہلی میں کمبھ میلے سے واپس آنےوالوں کےلیے چودہ روزہ قرنطینہ لازمی قرار دے دیا گیا،،دہلی سمیت مختلف ریاستوں میں اسپتالوں میں بیڈز اور آکسیجن کی شدید قلت ہے، بھوپال میں بھی کرفیو نافذ ہے،کیسزبڑھنےکے باجود بھارتی کسانوں کااحتجاج جاری ہے،کسان کہتے ہیں اگر مودی سرکار کو ہماری جانوں کی پرواہ ہے تومطالبات تسلیم کیےجائیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >