برطانیہ کی جانب سے بھارت کو بھی ریڈ لسٹ میں ڈال دیا گیا

برطانیہ کی جانب سے بھارت کو بھی ریڈ لسٹ میں ڈال دیا گیا

بھارت میں کورونا وائرس کی خطرناک صورتحال کے باعث برطانوی وزیراعظم 2 بار اپنا دورہ بھارت منسوخ کر چکے ہیں۔ اب برطانوی حکومت کی جانب سے بھارت کو بھی اسی ریڈلسٹ میں ڈال دیا گیا ہے جس میں پاکستان سمیت دیگر کئی ممالک پہلے سے موجود ہیں۔

دوسری جانب بھارت میں وائرس کی صورتحال کی بات کی جائے تو ایک روز میں ریکارڈ 2 لاکھ 73 ہزار افراد کورونا کا شکار ہوئے ہیں۔

ادھر دلی کے اسپتالوں میں انتہائی نگہداشت وارڈز کے بیڈز 90 فیصد بھر چکے ہیں اور یہاں ایک ہفتے کیلئے لاک ڈاؤن بھی لگا دیا گیا ہے۔

ہانگ کانگ سے یہ خبر ہے کہ یہاں وائرس کی نئی قسم سامنے آئی ہے جس کے بعد اس نے پاکستان، بھارت اور فلپائن کی پروازوں پر پابندی لگا دی ہے۔

سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ملک امریکا میں اب تک 13 کروڑ لوگوں کو کورونا وائرس کی ویکسینیشن کر دی گئی ہے مگر یاد رہے کہ ان 13 کروڑ لوگوں کو فی الحال ویکسین کی پہلی خوراک دی گئی ہے۔

برطانیہ بھارت سے قبل پاکستان کو بھی ریڈ لسٹ میں ڈال چکا ہے اور اس کا یہ فیصلہ قانونی طور پر چیلنج کر دیا گیا، برطانیہ سے پاکستان آئے خاندان کی درخواست پر بھی کارروائی شروع ہو گئی ہے۔

علاوہ ازیں برطانوی پارلیمنٹ کے 34 ارکان نے پاکستان کو ریڈ لسٹ میں ڈالنے کے حوالے سے تحفظات کا اظہار کیا تھا اور برطانوی حکومت کے اس فیصلے کے خلاف وزیراعظم بورس جانسن کو خط لکھا تھا۔

ان ارکان پارلیمنٹ نے سوال اٹھایا تھا کہ پاکستان سے بھی زیادہ بری صورتحال والے کئی ممالک کو جب ریڈ لسٹ میں شامل نہیں کیا گیا تو بتایا جائے کہ پاکستان کو کس پالیسی کے تحت ریڈ لسٹ میں ڈالا گیا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >