بھارت میں کرونا وائرس بے قابو۔۔ پاکستان میں کیا صورتحال ہے؟

پاکستان اور بھارت میں کورونا کے شدید وار، بھارت میں صورتحال انتہائی سنگین

ملک میں کورونا وائرس کی تیسری لہر مسلسل جان لیوا ثابت ہورہی ہے،گزشتہ ایک روز میں 137اموات رپورٹ ہوئی ہیں ، پنجاب اورخیبرپختونخوا سرفہرست ہے ، ساڑھے پانچ ہزار کے قریب نئے کیسز بھی رپورٹ ہوئے ،ایکٹیو کیسز83ہزار298 جبکہ مثبت کیسز کی شرح8فیصد تک پہنچ گئی۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے تازہ اعداد وشمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں میں مزید137اموات ہوئیں، پنجاب میں 104، خیبرپختونخوا 21،سندھ ، اسلام آباد اورآزاد کشمیرمیں تین تین اموات رپورٹ ہوئیں، مجموعی اموات 16ہزار453 تک پہنچ گئیں ، مختلف اسپتالوں میں5ہزار314مریض زیرعلاج ہیں، جبکہ549 وینٹی لیٹر پرموجود ہیں،کورونا سے ایک دن میں 4 ہزار 286مریض صحت یاب ہوئے جس کے بعد صحت یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 667,131ہوگئی ہے۔

گذشتہ 24 گھنٹوں میں68ہزار2ٹیسٹ کیے گئے، جن میں سے 5ہزار445نئے کیسز رپورٹ ہوئے، پنجاب 2لاکھ73ہزار566 متاثرین کے ساتھ سرفہرست ہے، سندھ 2لاکھ73ہزار466 اور خیبرپختونخوامیں1لاکھ7ہزار309 متاثرہو چکے ہیں،مردان میں 95 فیصد ،گجرانوالہ 88 فیصد،ملتان 85 فیصد اورلاہور میں 82 فیصد وینٹی لیٹر بھرچکے ہیں، پشاورمیں 72،نوشہرہ 68 فیصد ،سوات 65 فیصد آکسیجن بیڈ پر مریض موجود ہیں۔

ادھر بھارت میں بھی کورونا کے تابڑ توڑ حملے جاری ہیں، گزشتہ چوبیس گھنٹے میں دو لاکھ تہتر ہزار افراد وائرس کا شکار اور ریکارڈ سترہ سو اکسٹھ اموات ہوئیں،مہاراشٹر کے تین سو اکیاون افراد شامل ہیں، صرف مہاراشٹر میں اٹھاون ہزار نوسو چوبیس مریض رپورٹ ہوئے،دہلی میں ریکارڈ دو سو چالیس اموات ہوئیں اور تیئیس ہزار سے کیسز سامنے آئے۔

دہلی اور مہاراشٹر کے اسپتال متاثرین سے بھر چکے ہیں، آئی سی یو اور وینٹی لیٹرز کی قلت ہے،وزیراعلیٰ اروند کیجریول نے آج ایک ہفتے کا لاک ڈاون لگادیا،بی جے پی کی جانب سے دہلی حکومت کی ناکام پالیسی پر تنقید کی جارہی ہے۔

ریاست کیرالا،کرناٹک، تامل ناڈو، آندھرا پردیش بھی سب سے زیادہ متاثر ہے۔۔ کیرالا میں رات نو سے صبح چھ بجے تک کرفیو لگادیا گیا،بھارت میں ایک ہفتے میں پندرہ لاکھ بتیس ہزار سے زائد افراد میں وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے،بھارت میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد ایک کروڑ 53 لاکھ 14 ہزار سے زائد ہے اور ایک لاکھ 80 ہزار 550 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔

بھارت میں اٹھارہ سال سے بڑی عمر کے تمام افراد کو یکم مئی سے کووڈ ویکسین لگائی جائے گی،برطانوی وزیراعظم نے کورونا کی سنگین صورتحال کے باعث بھارت کا دورہ منسوخ کردیا،جبکہ برطانیہ میں بھارتی کورونا کےایک سو تین کیسز سامنے
آنے پر برطانیہ نے بھارت کو ریڈ لسٹ میں شامل کردیا۔۔ادھرامریکا نے بھی اپنے شہریوں کو بھارت سفر نہ کرنے کی ہدایت کردی،بھارتی طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث ملک کے نظام صحت پردباؤ بڑھ رہاہے۔

سابق بھارتی وزیراعظم من موہن سنگھ بھی کورونا کا شکار۔۔ گزشتہ روز کورونا ٹیسٹ پوزیٹو آیا۔۔ اسپتال منتقل کردیا گیا، کورونا پوزیٹیو ہوگیا،، انہیں آل انڈیا انسٹیٹوٹ آف میڈیکل سائنسسز دہلی میں داخل کروادیا گیا،اٹھاسی سالہ کانگریس پارٹی کے رہنما اور معروف ماہر معاشیات ڈاکٹر من موہن سنگھ کا اسپشلسٹ ڈاکٹرز کی ٹیم علاج کر رہی ہے۔۔ من موہن سنگھ نے کورونا ویکسین کی پہلی ڈوز چار مارچ اور دوسری تین اپریل کو لگوائی تھی۔

دوسری جانب مودی کی بے حسی برقرارہے،کسانوں کے مطالبات تاحال نہ مان کر زندگیاں خطرے میں ڈال دیں،کسان بھی جان کی پرواہ کئے بغیر ایک بار ہھر دہلی جانے کیلئے پرعزم۔۔ سمیوکت کسان مورچہ نے چوبیس اپریل کو "پھردہلئ چلو” کی تحریک کا اعلان کردیا۔۔۔ جبکہ دس مئی کو ملک بھر میں احتجاج کیا جائے گا۔۔ چوبیس اپریل کو کسان تحریک کو ایک سو پچاس دن پورے ہوجائیں گے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>