اب کورونا ویکسین کھائی بھی جاسکتی ہے،روسی سائنس دانوں کا اعلان

اب کورونا ویکسین کھائی بھی جاسکتی ہے،روسی سائنس دانوں کا اعلان

دنیا بھر میں کورونا ویکسین انجیکشن کی شکل میں دی جارہی ہے، لیکن روسی ماہرین نے دنیا کی پہلی کھانے والی کورونا ویکسین بنانے کا اعلان کردیا،کھانے والی ویکسین بنانے کامقصد سرجیکل سوئیوں کے خوف کے باعث ویکسین نہ لگوانے والوں کیلئے آسانی پیدا کرنا ہے۔

روسی سائنس دانوں نے کھانے والی ویکسین کے ٹرائلز بھی شروع کردیے ہیں،روسی انسٹی ٹیوٹ برائے تجرباتی میڈیسن دنیا کی پہلی کھانے والی ویکسین کے کلینکل ٹرائلز کررہا ہے،روسی شہر سینٹ پیٹرزبرگ کے سائنسدانوں کی ٹیم کورونا کے خلاف ایک اورل ویکسین کی حتمی تیاری کا فیصلہ کیا۔

اب کورونا ویکسین کھائی بھی جاسکتی ہے،روسی سائنس دانوں کا اعلان

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ لاکھوں افراد کو کورونا وائرس کے خلاف ویکسین دینے کے عمل کو تیز کرسکتا ہے،روسی اکیڈمی آف سائنسز کے ایک اعلیٰ عہدیدار کا کہنا ہے کہ کھانے میں دہی کے ذائقے کی طرح کی کورونا ویکسین رواں سال ہی حتمی طور پر تیار ہوجائے گی، اس ویکسین کی تیاری میں لاگت 220 ملین روبل ($ 2.9 ملین) رکھی گئی ہے۔ روس میں کورونا سے 106,307 اموات اور 4,718,854افراد متاثرہوچکے ہیں۔

اب کورونا ویکسین کھائی بھی جاسکتی ہے،روسی سائنس دانوں کا اعلان


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>